Wednesday , October 24 2018
Home / Top Stories / سماج وادی پارٹی کے امید وار کو بی ایس پی کی حمایت

سماج وادی پارٹی کے امید وار کو بی ایس پی کی حمایت

Image Courtesy Catch News

لکھنؤ: اتر پردیش میں ایک لمبے عرصہ کے بعد ایک نئی سیاسی تصویر سامنے آرہی ہے۔ریاست کے گورکھپور اور پھولپور میں ہونے والے لوک سبھا کے ضمنی انتخابات میں بہوجن سماجوادی پارٹی نے سماج وادی پارٹی (ایس پی) کے امید وار کو حمایت دینے کا اعلان کیا۔اس طرح بی جے پی کے امیدوار کے لئے مشکلات بڑھ گئی ہیں ۔

گورکھپور پارلیمانی حلقہ کے بی ایس پی کوآرڈینیٹر گھنشیام کھروار نے گورکھپور کے چمپادیوی پارک میں کارکنان کی میٹنگ میں یہ اعلان کرتے ہوئے کہا کہ ایس پی امیدوار پروین نشاد کو کامیاب بنانے کی اپیل کی ہے۔کھروارنے گورکھپور میں ایک جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بی ایس پی کا ہر رکن ا س ضمنی الیکشن میں سماج وادی پارٹی کے ا میدوار کے لئے گھر گھر جاکر ووٹ مانگے گا۔

کھر وار اورمسٹر سنگھ نے ہاتھ اٹھاکر نشاد کو کامیاب منانے کی اپیل کی ہے۔بی ایس پی کے ذریعہ ایس پی کے امیدوار کی حمایت کرنے کے بعد اب گورکھپور میں کانگریس کے امیدوار کی پوزیشن کمزور ہوتی نظر آرہی ہے۔کیوں کہ اقلیتی ووٹر کانگریس کی امیدوار ڈاکٹر کریم کو ووٹ دینے کے حق میں تھے وہ اب ایس پی امیدوار کی حمایت میں متحد ہوسکتے ہیں ۔واضح رہے کہ اس حلقہ کی سیٹ یوگی ادتیہ ناتھ کے وزیر اعلی بننے کے بعد خالی ہوئی تھی ۔

اس سیٹ پر ووٹنگ ۱۱ مارچ کوہوگی۔دریں اثنا گورکھ پور اور پھول پور میں لوک سبھا کے ہونے والے ضمنی انتخابات میں بی ایس پی کی جانب سے سماجوادی پارٹی کے امید وار کی حمایت کے بات کرنے پر بی ایس پی سربراہ مایاوتی نے واضح کیا کہ ضمنی الیکشن میں ان کی پارٹی بی جے پی کو شکست دینے کے لئے سماج وادی پارٹی کے امیدوار کی حمایت کریگی۔

انھوں نے کہا کہ گورکھپور اور پھولپور میں جو بھی امیدوار بی جے پی کو شکست دینے کی پوزیشن میں ہوگا پارٹی اس کی حمایت کرے گی۔اس کے علاوہ ان کی پارٹی کہیں بھی کسی سے تال میل نہیں کیا ہے۔

انھوں نے مزید کہا کہ ضمنی انتخابات میں ا ن کے حامیوں کو ووٹ ڈالنے کا حق قانون نے دیا ہے۔جس کے تحت وہ اپنے حق بی جے پی کو شکست دینے والے امید وار کے حق میں ووٹ ڈالیں گے۔

TOPPOPULARRECENT