Sunday , September 23 2018
Home / سیاسیات / سماج وادی پارٹی کے صدر کی ارکان اسمبلی سے ملاقات ،بی جے پی پر تنقید

سماج وادی پارٹی کے صدر کی ارکان اسمبلی سے ملاقات ،بی جے پی پر تنقید

لکھنؤ ۔ 21 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) راجیہ سبھا انتخابات سے قبل سماج وادی پارٹی کے صدر اکھیلیش یادو نے آج اپنے پارٹی ارکان اسمبلی کا ایک اجلاس منعقد کیا۔ اکھیلیش یادو نے پارٹی ارکان اسمبلی کے ساتھ آئندہ راجیہ سبھا انتخابات کیلئے پارٹی کی حکمت عملی پر تبادلہ خیال کیا اور انہوں نے بی جے پی پر تنقید کی جس نے اضافہ امیدوار کھڑے کئے ہیں۔ اکھیلیش یادو نے ارکان اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اگر بی جے پی اخلاقی اور جمہوری اقدار کی پرواہ کرتی ہے تو اسے 9 امیدوار کھڑا کرنے کی ضرورت نہیں تھی۔ بی جے پی جانتی ہے کہ وہ آمرانہ انداز میں اور ناقص طور طریقے سے اپنی ذہنیت ظاہر کرچکی ہے۔ اس نے ایک تاجر انیل کمار اگروال سے اپنا 9 واں امیدوار بنایا ہے جس کی وجہ سے رائے دہی لازمی ہوگئی ہے۔ شیوپال یادو عشائیہ میں شریک ہوئے۔ ارکان اسمبلی کے ساتھ تبادلہ خیال کے دوران موجود نہیں تھے۔ شیوپال یادو نے کہاکہ وہ رائے دہی میں حصہ لیں گے۔ انہیں یقین ہیکہ سماج وادی پارٹی کے امیدوار اور اس کے تائید یافتہ امیدوار یقینا کامیابی حاصل کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ اکھیلیش کو ان کا آشیرواد حاصل ہے۔ یوپی اسمبلی میں سماج وادی پارٹی کے 47 ارکان ہیں جن میں سے نتن اگروال امکان ہیکہ بی جے پی کی تائید کریں گے۔ وہ نریش اگروال کے فرزند ہیں جنہوں نے حال ہی میں سماج وادی پارٹی سے استعفیٰ دیتے ہوئے بھگوا پارٹی میں شمولیت اختیار کی ہے۔ سینئر پارٹی قائد اعظم خان ان کے فرزند عبداللہ اعظم اور رکن اسمبلی ہری اوم (فی الحال جیل میں) بھی اجلاس میں موجود نہیں تھے۔ تاہم پارٹی قائدین نے کہا کہ یہ تمام افراد سماج وادی پارٹی کی تائید میں ہے اور انہیں پارٹی امیدواروں کی کامیابی کا یقین ہے۔ پارٹی ارکان اسمبلی کے علاوہ جیہ بچن اور ڈمپل یادو بھی جو امیدوار ہیں، موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT