Friday , April 20 2018
Home / شہر کی خبریں / سمنٹ کی قیمت میں اضافہ ، حکومتی پراجکٹس بے اثر ، عام آدمی پریشان

سمنٹ کی قیمت میں اضافہ ، حکومتی پراجکٹس بے اثر ، عام آدمی پریشان

حیدرآباد ۔ 11 ۔ اپریل : ( سیاست نیوز) : تلنگانہ اور آندھرا پردیش میں سمنٹ کی قیمتوں میں اضافہ کردیا گیا ہے اور مہنگی سمنٹ سے حکومتی پراجکٹ متاثر نہیں ہوں گے کیوں کہ سمنٹ فراہم کرنے والی کمپنیوں نے پہلے ہی حکومت سے اپنی قیمتیں طئے کردی ہیں جب کہ سمنٹ کی قیمت میں اضافہ سے عام آدمی متاثر ہوگا ۔ سمنٹ صنعت کے ذرائع نے کہا کہ سمنٹ کی قیمت میں اضافہ کا راست اثر عام آدمی کے تعمیراتی کاموں پر ہوگا کیوں کہ حکومت کے ساتھ پہلے ہی معاہدہ طئے ہوچکا ہے لہذا قیمت میں اضافہ کا حکومتی پراجکٹس پر اثر نہیں پڑے گا ۔ بھارتی سمنٹ کے مارکیٹنگ ڈائرکٹر ایم رویندر ریڈی نے کہا ہے کہ ریاستی حکومت کے ساتھ سمنٹ کی سربراہی کا جو معاہدہ ہوا ہے اس کے تحت فی تھیلہ کی قیمت 230 روپئے مقرر کی گئی ہے اور معاہدے کے شرائط میں یہ بھی طئے پایا ہے کہ قیمت میں اضافہ کا معاہدہ پر اثر نہیں ہوگا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ فی تھیلہ 70 روپئے اضافہ کی بات افواہ ہے کیوں کہ اصل میں 20 تا 30 روپئے فی تھیلہ قیمت میں اضافہ کیا گیا ہے اور مارکٹ سے مارکٹ کی قیمت میں 30 روپئے سے زیادہ کا اضافہ نہیں کیا گیا ہے اور قیمت میں اضافہ کمپنی کی مجبوری ہے چونکہ کوئلہ اور ایندھن کی قیمتوں میں اضافہ ہوچکا ہے جس کی وجہ سے سمنٹ کی قیمت میں بھی اضافہ کردیا گیا ہے ۔ دوسری جانب رئیل اسٹیٹ ڈیولپرس نے کہا ہے کہ چند ہفتوں کے دوران سمنٹ کے فی تھیلے کی قیمت میں 70 روپئے اضافہ کردیا گیا ہے چونکہ چند مہینے قبل جو تھیلہ 280 روپئے میں دستیاب تھا اب اس کی قیمت 350 روپئے کردی گئی ہے ۔ ریاست تلنگانہ میں تعمیراتی کاموں اور سمنٹ کی مانگ کافی بڑھ چکی ہے جیسا کہ مالیاتی سال 2018 میں سمنٹ کی مانگ میں 40 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے جب کہ ریاست آندھرا پردیش میں سمنٹ کی مانگ میں اضافہ صرف 2 فیصد ہی ریکارڈ کیا گیا ہے لیکن جنوری تا مارچ کے عرصے کے دوران آندھرا پردیش میں سمنٹ کی مانگ میں 30 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT