Wednesday , December 19 2018

سمیع کے جواب سے حسین جہاںغصے سے پھٹ پڑیں

نئی دہلی۔ 11 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستانی کرکٹر محمد سمیع اور ان کی اہلیہ حسین جہاں کے درمیان خاندانی لڑائی سڑکوں پر آجانے کے بعد ہر دن اس میں ایک نیا موڑ آرہاہے ۔حسین نے پھر سے کرکٹر پر نئے الزام لگائے اور اتوار کو نامہ نگاروں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اگر سمیع کا فون ان کے ہاتھ نہیں لگا ہوتا تو اب تک کرکٹر بھاگ گیا ہوتا اور اب تک طلاق بھی دے دیا ہوتا۔ ہندوستانی ٹیم کے تیز گیند باز کے خلاف ان کی اہلیہ نے کولکاتا پولس میں گھریلو تشدد، زنا بالجبر، جہیز اورکئی خواتین کیساتھ ناجائز تعلقات رکھنے کے سنگین الزام لگاتے ہوئے ایف آئی آر درج کرائی ہے ۔ہندوستانی کرکٹر ان الزامات کے بعد اپنے کردار کے خراب ہونے کے ساتھ ساتھ قومی ٹیم اور مستقبل قریب میں ہونے والی انڈین پریمیر لیگ میں بھی اپنے کیریر کو لے کر مشکل میں گھر گئے ہیں جہاں انہیں ہندوستانی کرکٹ کنٹرول بورڈ (بی سی سی آئی) نے چہارشنبہ کو جاری اپنے کھلاڑیوں کی فہرست سے انہیں باہر رکھا ہے ۔وہیں سمیع آئی پی ایل کی ان کی ٹیم دلی ڈیر ڈیویلس بھی انہیں لیگ میں کھلانے پر نئے سرے سے غور کررہی ہے ۔حسینہ نے کہا کہ ”میں نے سمیع کو ان کا فون ملنے کے بعد کافی سمجھانے اور اپنی غلطی تسلیم کرنے کیلئے کہا ۔ میں انہیں کافی عرصے سے سمجھا رہی ہوں۔ اگر مجھے سمیع کا فون نہیں ملا ہوتا تو وہ اب تک اترپردیش بھاگ گیا ہوتا اور مجھے طلاق بھی دے دیا ہوتا”۔

TOPPOPULARRECENT