Thursday , September 20 2018
Home / Top Stories / سنجوان فوجی کیمپ حملہ میں ہلاکتوں کی تعداد 6 ہوگئی

سنجوان فوجی کیمپ حملہ میں ہلاکتوں کی تعداد 6 ہوگئی

۔5 فوجی و ایک عام شہری شامل ۔ سکیوریٹی فورسیس نے تین دہشت گردوں کو بھی مار گرایا

سنجوان ( جموں ) 11 فبروری ( سیاست ڈاٹ کام ) سکیوریٹی فورسیس نے سنجوان فوجی کیمپ میں تین دہشت گردوں کو ہلاک کردیا جبکہ چھ افراد اس حملہ میں ہلاک ہوئے ہیں جن میں پانچ فوجی اہلکار شامل ہیں۔ فوجی عہدیداروں نے یہ بات بتائی ۔ وزارت دفاع کے ترجمان نے ایک بیان میں کہا کہ تین دہشت گردوں کو اب تک اس کارروائی میں مار گرایا گیا ہے ۔ کہا گیا ہے کہ انتہائی مسلح دہشت گردوں کے ایک گروپ نے جموںو کشمیر لائیٹ انفینٹری کی 36 ویں بریگیڈ کے وسیع و عریض کیمپ پر کل صبح سے پہلے حملہ کیا تھا ۔ پانچ فوجی اہلکار بشمول دو جونئیر کمیشن آفیسر اس حملے میں ہلاک ہوگئے ہیں۔ ترجمان نے بتایا کہ تیسرا دہشت گرد بھی فوجی لڑاکا جیکٹ پہنے ہوئے پایا گیا ۔ انہوں نے بتایا کہ دہشت گردوں کے قبضے سے اے کے 56 رائفلس ‘ انڈر بیاریل گرینیڈ لانچر ‘ اسلحہ اور گرینیڈز وغیرہ ضبط کئے گئے ہیں۔ ایک سینئر پولیس عہدیدار نے قبل ازیں کہا کہ چار دہشت گردوں کو سکیوریٹی فورسیس نے ہلاک کردیا ہے ۔ ایک جونئیر کمیشن عہدیدار اور ایک جوان کل ہی اس لڑائی میں ہلاک ہوگیا تھا ۔ ترجمان نے کہا کہ رہائشی کوارٹرس کو دہشت گردوں سے پاک کرنے کی مہم کے دوران فوجی کمانڈوز کو ایک اور جونئیر کمیشن عہدیدار اور دو جوانوں کے علاوہ ایک معمر شخص کی نعش دستیاب ہوئی ۔ یہ معمر شخص ایک سپاہی کا باپ ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ تمام چھ فوجی اہلکار دہشت گردوں کے ہاتھوں ہلاک ہوئے ہیں۔

یہ سب کل ہی حملہ کی زد میں آئے تھے ۔ ترجمان کے بموجب چھ خواتین اور بچوں کے بشمول جملہ دس افراد اس حملہ میں زخمی ہوئے ہیں۔ ایک زخمی خاتون حاملہ تھی اور بعد ازاں اس نے ایک لڑکی کو جنم دیا ۔ دونوں ماں اور لڑکی کی حالت مستحکم بتائی گئی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ ایک 14 سالہ لڑکے کو سر میں گولی لگنے سے وہ زخمی ہوگیا اور اس کی حالت نازک بتائی گئی ہے ۔ عہدیداروں نے بتایا کہ علاقہ کو دہشت گردوں سے پاک کرنے اور تلاشی مہم کا کام جاری ہے ۔ جموں سے کام کرنے والے فوجی پی آر او لیفٹننٹ کرنل دیویندر آنند نے بتایا کہ اس علاقہ میں کارروائی جاری ہے اور رہائشی کوارٹرس سے بھی لوگوں کا تخلیہ کروایا جا رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کئی خاندان اب بھی کیمپ میں ہیں اور فوج کا مقصد ان کی حفاظت کو یقینی بنانا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ کل سے اب تک کوئی فائرنگ نہیں ہوئی ہے ۔ واضح رہے کہ فوجی کیمپ پر 15 ماہ قبل بھی حملہ ہوا تھا اور وہ بھی اسی نوعیت کا تھا ۔ 29 نومبر 2016 کو عسکریت پسندوں نے ناگروٹا کیمپ پر حملہ کیا تھا ۔

فورسیس پر حملوں کا جائزہ ضروری : یشونت سنہا
نئی دہلی 11 فبروری ( سیاست ڈاٹ کام )جموں و کشمیر میں ایک فوجی کیمپ پر دہشت گردوں کے حملوں کے ایک دن بعد سینئر بی جے پی لیڈر یشونت سنہا نے آج کہا کہ سکیوریٹی فورسیس پر مسلسل حملوں کے مسئلہ کا جائزہ لیا جانا چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ اس طرح کے حملو ںکے بعد ہندوستان کمزور نظر آتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حملہ سے ظاہر ہوتا ہے کہ دہشت گردوں سے نمٹنے کیلئے جو اقدامات کئے جا رہے ہیں ان کے نتائج سامنے نہیں آ رہے ہیں ۔ انہوں نے مرکز سے کہا کہ وہ اس طرح کے حملوں کو روکنے کیلئے ضروری اقدامات کرے ۔

TOPPOPULARRECENT