Friday , December 15 2017
Home / شہر کی خبریں / سندھ کو بگاڑ کر ہندوستان میں تبدیل کیا گیا

سندھ کو بگاڑ کر ہندوستان میں تبدیل کیا گیا

ماتا کا تصور مذہبی یا دستوری حیثیت سے کوئی جواز نہیں ، ڈاکٹر کے چرنجیوی
حیدرآباد۔21مارچ(سیاست نیوز)بھارت ماتا کی جئے کے نام پر اقتدار حاصل کرنے سے قبل کئے گئے عوامی وعدوں سے توجہ ہٹانے کی سازش کا مودی حکومت پر الزام عائد کرتے ہوئے تلنگانہ ڈیموکرٹیک اینڈ سیکولر الائنس کنونیر ڈاکٹر کولیروچرنجیوی نے کہاکہ ہندوستان کی طویل تاریخ میں کوئی بھی ایسا واقعہ نہیںملتاجس کے ذریعہ بھارت ماتا کی جئے کے نعرے کا انکار ملک سے غداری مانی جائے گی۔ پریس کانفرنس کے دوران میڈیا سے بات کرتے ہوئے ڈاکٹر کولیروچرنجیوی نے کہاکہ زمانہ قدیم میں ہندوستان کا جمودیویپ کے نام سے جانا جاتا تھا بعد میںبھارت کانڈہ اور انڈیس ندی کی وجہ سے انڈیا پکار ا جانے لگا۔ڈاکٹر چرنجیوی نے کہاکہ دریا سندھ کو بگاڑ کر ہند کردیا جو بعد میں ہندوستان میںتبدیل ہوگیا۔ ڈاکٹر چرنجیوی نے تاریخی واقعات کا تفصیلی ذکر کرتے ہوئے کہاکہ ہندوستان یا پھر انڈیا کے متعلق ماتا کاتصور کرنے کا مذہبی اور دستوری حیثیت سے کوئی جواز نہیں ملتا۔انہوں نے کہا آر ایس ایس ‘ وی ایچ پی‘ بی جے پی اورہندوواہنی جیسی تنظیمیں سنکم چٹوپادھیائے کے گیت وندے ماترم کے پیش نظر ہندوستان کو ماتاکا درجہ دے کر مسلم‘ عیسائی‘ بدھسٹوں کو ملک دشمن قراردینے کی ساز ش تیار کررہے ہیںکیونکہ انہیںمعلوم ہے کہ مذکورہ مذاہب کے لوگ کسی بھی صورت میںوندے ماترم کو اپنا قومی ترانہ نہیںمانیں گے۔ڈاکٹر چرنجیوی نے کہاکہ ہندوستان کے تمام مول نواسی جئے بھیم اور جئے بھارت کانعرہ لگاتے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ دستور ہند کی کتاب پر بھی جئے بھارت تحریر کیاہوا ہے جس سے صاف ظاہر ہوتا ہے کہ دستور ہند کے معمارڈاکٹر بھیم رائو امبیڈکر کے بشمول مجاہدین جنگ آزاد جس میںجواہر لال نہرو بھی شامل تھے نے ہر حال میںبھارت ماتا کی جئے کے نعرے درکنار کرتے ہوئے قومی سالمیت کو فوقیت دی اور اکثریت کے ساتھ ساتھ اقلیتی طبقات کے جذبات اور احساسات کو قدر ومنزلت کی نگاہ سے دیکھا ہے۔ ڈاکٹر چرنجیوی نے کہاکہ فرقہ پرست طاقتوں کی جانب سے بھارت ماتا کی جئے کے نام پر چھیڑی گئی اس بحث کے پس پردہ سازشوں کا پردہ فاش کرنے کے لئے تلنگانہ ڈیموکرٹیک الائنس کی جانب سے 22فبروری کو ایک کل جماعتی گول میز کانفرنس کاانعقاد عمل میںلایاجار ہا ہے۔انہوں نے تمام سکیولر ذہن کے حامل افراد سے اس گول میز کانفرنس میںشرکت کی دعوت دی ہے۔

TOPPOPULARRECENT