Monday , November 20 2017
Home / شہر کی خبریں / سنٹرل یونیورسٹی آف حیدرآباد میں دکنی سمینار و کتابوں کا رسم اجراء

سنٹرل یونیورسٹی آف حیدرآباد میں دکنی سمینار و کتابوں کا رسم اجراء

ملک گیر سطح سے اسکالرس و اساتذہ کی شرکت ، جناب زاہد علی خان کا خطاب
حیدرآباد ۔ /8نومبر (راست) شعبہ اردو اور اسکول آف ہیومانیٹیز سنٹرل یونیورسٹی آف حیدرآباد کے زیراہتمام دو روزہ راجادھن راج گیر جی یادگار دکنی قومی سمینار /4 اور /5 نومبر کو بنام ’’دکنی اردو لسانی ادبی جہات‘‘ کا آڈیٹوریم ہال اسکول آف ہیومانیٹیز یونیورسٹی آف حیدرآباد میں انعقاد عمل میں آیا ۔ اس دو روزہ سمینار میں مختلف موضوعات پر ملک کے نامور پروفیسروں اور اسکالروں نے اپنے تحقیقی مقالات پیش کئے اور سمینار کے اختتام سے قبل شعبہ اردو کے چار ریسرچ اسکالروں کی تصانیف جن میں ڈاکٹر آمنہ آفرین کی کتاب ’’اردو میں تجریدی افسانہ ‘‘ راجکماری اندرا دیوی دھن راج گیر جی کے ہاتھوں عمل میں آئی ۔ محترمہ رئیسہ بیگم کے مقالے ’’قاضی مشتاق احمد بحیثیت افسانہ نگار ‘‘ کی پروفیسر اشرف رفیع نے رسم اجراء انجام دی جب کہ محترمہ واجدہ بیگم کی کتاب ’’قرۃ العین حیدر کی رپورتاژ نگاری ‘‘ کو پروفیسر م ۔ ن سعید اور محمد انور الدین کی تصنیف ’’ اردو کی آسان قواعد‘‘ بدست جناب زاہد علی خان ایڈیٹر روزنامہ سیاست حیدرآباد رسم رونمائی عمل میں آئی ۔ اس موقع پر راجکماری اندرا دیوی دھن راج گیر جی ، جناب زاہد علی خان ، پروفیسر اشرف رفیع ،پروفیسر مظفر شہ میری ، پروفیسر م ۔ ن سعید ، ڈاکٹر نسیم الدین فریس ، پروفیسر فاطمہ بیگم پروین ، پروفیسر رضوانہ معین ، ڈاکٹر قاسم علی خان ، پروفیسر ستار ساحر ، پروفیسر فیروز احمد ، پروفیسر شوکت حیات ، ڈاکٹر عبدالرب منظر ، ڈاکٹر عرشیہ جبین ، ڈاکٹر محمد کاشف ، ڈاکٹر نشاط احمد ، ڈاکٹر رفیعہ بیگم کے علاوہ مانو کے اساتذہ شہر کے مختلف کالجوں کے اساتذہ اور بیرون ریاستوں سے تشریف فرما مندوبین کے علاوہ طلبہ و طالبات ، خواتین و حضرات کی کثیر تعداد شریک تھی  ۔

TOPPOPULARRECENT