Wednesday , December 19 2018

سوئس بینکوں کو کھاتے بند کرنے کی عجلت کیوں ہے؟

ممبئی 24 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام)سوئس بینکوں نے اپنے کھاتے داروں سے 31 ڈسمبر تک اپنے کھاتے بند کرلینے کی خواہش کی ہے کیونکہ سوئس بینکس اپنے سابق کھاتے داروں کے کھاتے کی تفصیلات ظاہر کرنے کی پابند نہیں ہے۔ یہ بینکس اس بات سے بھی نا واقف ہیں کہ جن ہندوستانیوں کے اس میں کھاتے ہیں ان کی ٹیکس ادائیگی کا موقف کیا ہے۔ علاوہ ازیں ایسا کھاتا جس م

ممبئی 24 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام)سوئس بینکوں نے اپنے کھاتے داروں سے 31 ڈسمبر تک اپنے کھاتے بند کرلینے کی خواہش کی ہے کیونکہ سوئس بینکس اپنے سابق کھاتے داروں کے کھاتے کی تفصیلات ظاہر کرنے کی پابند نہیں ہے۔ یہ بینکس اس بات سے بھی نا واقف ہیں کہ جن ہندوستانیوں کے اس میں کھاتے ہیں ان کی ٹیکس ادائیگی کا موقف کیا ہے۔ علاوہ ازیں ایسا کھاتا جس میں رقم جمع نہ ہو ہندوستان کے ٹیکس قوانین کے مطابق پریشان کن ثابت ہوسکتا ہے یہی وجہ ہے کہ سوئس بینکس اپنے کھاتے داروں کو 31 ڈسمبر تک کھاتے بند کرلینے کی ہدایت دے رہی ہے۔کم از کم چار کھاتے داروں کو ٹیلی فون کال وصول ہوچکے ہیں اور ان سے اپنے کھاتے بند کرلینے کی خواہش کی گئی ہے ۔ ایک کھاتے دار سے کہا گیا ہے کہ وہ 30 اکٹوبر تک اپنا کھاتہ بند کردے جبکہ دیگر کو 31 ڈسمبر تک کھاتے بند کرنے کی ہدایت دی گئی ۔ قانونی موقف کے مطابق نمبر دار کھاتے آر بی آئی کی فراخدلانہ رقومات منتقلی اسکیم کے مطابق نہیںہیں ۔جب تک ٹرسٹ کے استفادہ کنندگان نمبردار کھاتوں کے حامل ہیں۔ ہندوستانی قوانین کے مطابق ان کا موقف متزلزل ہے۔

TOPPOPULARRECENT