Monday , June 25 2018
Home / سیاسیات / سورت میں ووٹنگ مشینوں کے قریب وائی فائی خدمات معطل

سورت میں ووٹنگ مشینوں کے قریب وائی فائی خدمات معطل

کانگریس امیدوار کی جانب سے ہیکنگ کے شبہات کے اظہار پر ضلع کلکٹر کے احکام

سورت 17 ڈسمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) سورت میں ایک کالج کے قریب آج وائی فائی خدمات کو معطل کردیا گیا کیونکہ کمریج اسمبلی حلقہ سے کانگریس امیدوار نے الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں کی ہیکنگ اور ان میں چھیڑ چھاڑ کے اندیشوں کا اظہار کیا تھا ۔ حالیہ گجرات اسمبلی انتخابات میں استعمال کئے گئے الیکٹرانک ووٹنگ مشین یہاں ایک کالج کیمپس میں رکھے گئے ہیں۔ کانگریس امیدوار اشوک جری والا کی شکایت کے بعد گاندھی انجینئرنگ کالج کے کیمپس میں وائی فائی خدمات کو معطل کردیا گیا ہے ۔ اشوک جری والا نے کہا کہ کالج میں اسٹرانگ روم کے قریب ایک وائی فائی نیٹ ورک کے موجود رہنے کا پتہ چلا تھا جس کے بعد ہم نے کلکٹر سے کارروائی کی خواہش کی تھی ۔ انہوں نے کہا کہ انہوں نے اسی طرح کی شکایت دو دن قبل بھی کی تھی جس کے بعد کلکٹر نے کیمپس میں وائی فائی خدمات کی معطلی کے احکام جاری کئے ۔ انہوں نے کہا کہ آج بھی ہم کو ایک وائی فائی کنکشن کارکرد رہنے کا پتہ چلا اور ہم کوئی خطرہ مول لے نہیں سکتے کیونکہ اس کے ذریعہ الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں کی ہیکنگ اور مشینوں میں چھیڑ چھاڑ کے اندیشے ہیں۔ اس شکایت کے بعد گجرات کے کلکٹر اور ضلع الیکشن آفیسر مہیندر پٹیل نے کالج حکام کو ہدایت دی کہ وہ اپنے کیمپس میں وائی فائی خدمات کو معطل کریں۔ پٹیل نے کہا کہ شکایت کنندہ کو اندیشہ تھا کہ وائی فائی کے استعمال سے اسٹرانگ روم میں رکھے ہوئے الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں کو ہیک کیا جاسکتا ہے یا ان میں چھیڑ چھاڑ کی جاسکتی ہے ۔ ضلع کلکٹر نے کہا کہ جس وائی فائی کا تذکرہ کیا گیا ہے وہ کالج کا ہے اور یہ طلبا استعمال کرتے ہیں۔ ہم سمجھتے ہیں کہ اس کے استعمال سے ووٹنگ مشینوں میں چھیڑ چھاڑ کا کوئی شبہ نہیں ہے ۔ تاہم شکایت کنندگان کے اندیشوں کو رفع کرنے ہم نے یہ فیصلہ کیا ہے ۔ چھ اسمبلی حلقوں اولپاڈ ‘ مانڈوی ‘ مہوا ‘ ویارا ‘ کمریج اور منگرول کے ووٹنگ مشین اس کالج میں رکھے گئے ہیں۔ گجرات اسمبلی انتخابات کیلئے ہوئی رائے دہی کے بعد کل ووٹں کی گنتی ہونے والی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT