Thursday , November 23 2017
Home / ہندوستان / سورج پنچولی کے پاسپورٹ کی واپسی کیلئے درخواست عدالت میں سی بی آئی سے حلفنامہ کی طلبی

سورج پنچولی کے پاسپورٹ کی واپسی کیلئے درخواست عدالت میں سی بی آئی سے حلفنامہ کی طلبی

ممبئی ۔ 9 ۔ مارچ (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) سی بی آئی نے آج فلمی اداکار سورج پنچولی کی پیش کردہ ایک عرضی کی مخالفت کی ہے جس میں انہوں نے بیرونی ملک دورہ کیلئے اپنا پاسپورٹ واپس کردینے کی درخواست کی ہے ۔ فلمی اداکار پر اپنی گرل فرینڈ جیہ خان کو خودکشی کیلئے اکسانے کا الزام ہے۔ سی پی آئی وکیل ہیئن وینیگاہ نگر نے جسٹس مردولا بھٹکر سے کہا کہ مذکورہ عرضی پر جواب دینے کیلئے ایجنسی کو وقت درکار ہے لیکن اصولاً وہ اس عرضی کی مخالف ہے۔ انہوں نے کہا کہ سورج پنچولی کو مستقل پاسپورٹ کی حوالگی پر اعتراض ہے کیونکہ متوفیہ کی والدہ رابیعہ خان نے ایک اور علحدہ مرافعہ داخل کیا ہے جس میں انہوں نے سورج کے خلاف قانون تعزیرات ہند کے دفعہ 302 کے تحت قتل کا الزام عائد کرنے کا اصرار کیا ہے اور اس کیس کی ایف بی آئی تحقیقات کی گزارش کی ہے ۔ سی بی آئی وکیل نے کہا ان حالات میں ملزم کو پاسپورٹ حوالے کرنے کی سفارش نہیں کرسکتے۔ تاہم عدالت نے کہا کہ چونکہ جرم کا ارتکاب سرزمین ہند پر کیا گیا ہے ۔ لہذا یہاں کی عدالت میں احکامات جاری کرے گی ۔ عدالت نے سی بی آئی کو ہد ایت دی کہ عرضی پر کل سماعت کیلئے اپنا جوابی حلفنامہ داخل کرنے اور اس معاملہ میں رابیعہ خان کے وکیل کی مداخلت کو روک دیا اور کہا کہ ملزم کو پاسپورٹ کی واپس کی درخواست میں مدعی (رابیعہ) کو مداخلت کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔ واضح رہے کہ فلمی اداکارہ جیہ خان نے 3 جون 2013 ء کو سب اربن جوہو میں واقع اپنے مکان میں سلینگ فیان سے لٹک کر خودکشی کرلی تھی اور خودکشی کیلئے اکسانے کے الزام میں ان کے بوائے فرینڈ سورج پنچولی کو 10 جون 2013 ء کو گرفتار کرلیا گیا تھا ۔ بعد ازاں 2 جولائی کو ہائیکورٹ نے انہیں ضمانت پر رہا کردیا تھا۔ متوفیہ جیہ کی والدہ رابیعہ خان نے ہائیکورٹ سے رجوع ہوکر عدالت کی نگرانی میں ایک آزادانہ ایجنسی کے ذریعہ تحقیقات کی درخواست کی تھی اور اپنی دختر کی خودکشی نے سورج پنچولی کو مورد الزام ٹھہرایا تھا جس کے بعد ہائیکورٹ نے یہ کیس جولائی 2014 ء کو سی بی آئی کے حوالے کردیا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT