Friday , February 23 2018
Home / اضلاع کی خبریں / سوریا پیٹ میں سڑک حادثہ چار افراد ہلاک

سوریا پیٹ میں سڑک حادثہ چار افراد ہلاک

سوریا پیٹ۔/17 مئی ، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) سوریا پیٹ ضلع کے موتے میں دلخراش سڑک حادثہ میں چار افراد بشمول دو لہا اور دو سالہ بچہ برسر موقع ہلاک ہوگئے۔ تفصیلات کے مطابق کوکٹ پلی حیدرآباد کے بالائی چرلہ ضلع کھمم میں بذریعہ بارات لے کر جارہے تھے کہ صبح سوریا پیٹ کے موتے منڈل میں پٹرول بینک کے قریب تیز رفتار لاری نے پیچھے سے بس کو ٹکر دے دی جس کے نتیجہ میں دولہا وینکٹا سائی ناتھ 21سالہ دامودھر راؤ 35سالہ ست نارائنا 70سالہ اور 12سالہ معصوم اکل برسر موقع ہلاک ہوگئے۔29افراد زخمی ہوگئے جس میں چند کی حالت تشویشناک ہے۔ حادثہ کی اطلاع ملتے ہی ضلع کلکٹر کے سرینواس موہن ضلع ایس پی پرمیلا نوتن ، ڈی ایس پی سنیتا موہن نے جائے حادثہ پہنچ کر معائنہ کیا۔ نعشوں کو بغرض پوسٹ مارٹم اور زخمیوں کو بغرض علاج ایریا ہاسپٹل منتقل کیا گیا۔ پولیس نے مقدمہ درج کرلیا ہے اور مصروف تحقیقات ہے۔

چیریال میں کسان کی خودکشی
حسن آباد۔/17 مئی، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) چیریال ٹاؤن میں آج صبح ایک کسان کی کیڑے مار دوا پی کر خودکشی کرلینے کی واردات پیش آئی۔ سب انسپکٹر چیریال لکشمن راؤ کے بموجب 52سالہ بجگم نرسمہلو نامی کسان روزانہ اپنے ماں بیوی کے مابین ہونے والی لڑائی جھگڑوں سے اکثر مایوس و متفکر رہا کرتا تھا اور اپنی ضعیف ماں 90سالہ کنکواں کی ہر ممکنہ خدمت و دیکھ بھال کرنے کا خواہاں تھا جبکہ متوفی کی بیوی و بچے ہٹ دھرمی کا رویہ اختیار کئے ہوئے عمر رسیدہ خاتون کو گھر سے بیدخل کرنے کے درپے تھے۔ اس ضمن میں کل رات دیر گئے تک ماں و بیوی میں ہوئی گالی گلوج و لفظی تکرار سے تنگ آکر نرسمہلو نے آج صبح اپنے زرعی باؤلی کے پاس خودکشی نوٹ تحریر کرکے کیڑے مار دوا پی کر برسر موقع فوت ہوگیا تاہم اپنی موت کے لئے کسی کو بھی ذمہ دار قرار نہیں دیا اور اپنی ضعیف والدہ کے ساتھ حسن سلوک کرنے کی اپنے بیوی بچوں کو سختی کے ساتھ تلقین کی۔ چیریال پولیس اس ضمن میں مصروف تحقیقات ہے۔

Top Stories

مولانا آزاد کی برسی پر تقریب کا انعقاد دہلی ومرکزی حکومت کی جانب سے بڑے لیڈران نے شرکت نہیں کی‘ صدر جمہوریہ ہند کی جانب سے ان کی مزار پر گل پوشی اور نائب صدر جمہوریہ نے اپنا پیغام بھیجا نئی دہلی۔آزادہندو ستا ن کے پہلے وزیر اتعلیم مولانا آزاد کے ساٹھ ویں یوم وفات کے موقع پر آج ان کے مزار واقع مینابازار میں ایک تقریب کا انعقاد ائی سی سی آر کی جانب سے کیاگیا۔افسوس کی بات یہ رہی کہ اس مرتبہ بھی مولانا آزاد کی وفات کے موقع پر دہلی ومرکزی حکومت کی جانب سے کسی بڑے لیڈران نے شرکت نہیں کی۔ چونکہ جامع مسجد پر کناڈہ کے وزیراعظم کو آناتھا اس لئے تقریب کو بہت مختصر کردیا گیاتھا۔ اس دوران صدرجمہوریہ ہند کی جانب سے ان کی مزار پر گل پوشی کی گئی او رنائب صدر جمہوریہ ہند نے اپنا پیغام بھیجا۔ ائی سی سی آر کے ڈائریکٹر نے مولانا آزاد کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہاکہ جہاں تک مولانا آزاد کا تعلق ہے اور انہوں نے جو خدمات انجام دیں انہیں فراموش نہیں کیاجاسکتا۔ ہندو مسلم میں اتحاد قائم کیااس کی مثال ملنا مشکل ہے انہوں نے بھائی چارہ کوفروغ دیا۔ انٹر فیتھ ہارمنی فاونڈیشن آف انڈیاکے چیرمن خواجہ افتخار احمد نے کہاکہ مولانا آزاد نے لڑکیوں کی تعلیم پر بہت زیادہ توجہ دی۔ جب حکومت قائم ہونے کے بعد قلمدان کی تقسیم ہونے لگے تو مولانا آزاد نے تعلیم کا قلمدان لیاتاکہ لڑکیو ں کی تعلیم پر خاص دھیان دیاجاسکے۔ خاص طور سے مسلم لڑکیو ں کی تعلیم پر زیادہ دھیان دیاجائے۔کیونکہ مسلم لڑکیو ں کو پڑھنے کے زیادہ مواقع نہیں مل پاتے ۔ معروف سماجی کارکن فیروز بخت احمد مولانا سے منسوب ایک پروگرام میں پونے گئے ہوئے تھے۔ انہوں نے نمائندہ کو فون پر بتایا کہ مولانا آزاد کی تعلیمات کو قوم نے بھلادیا ہے۔ آج تک ان جیسا لیڈر پیدا نہیں ہوسکا اور افسوس کی بات ہے کہ مولانا آزاد کی برسی یا یوم پیدائش کے موقع پر دہلی یامرکزی حکومت کی جانب سے کوئی بڑا لیڈر شریک نہیں ہوتا۔ ایسا معلوم ہوتا کہ حکومت نے مولانا آزاد کو بھلادیا ہے۔ اس دوران سی سی ائی آر کی ایک کمار مولانا ابولکلام آزاد فاونڈیشن کے چیرمن عمران خان سمیت کافی لوگ موجود تھے۔
TOPPOPULARRECENT