Friday , December 15 2017
Home / ہندوستان / سونے کے تبادلے کے اولین نظریہ کی پیشکشی

سونے کے تبادلے کے اولین نظریہ کی پیشکشی

گولڈ بانڈ اور سونے کے بدلے نقدرقم کی اسکیموں کا تذکرہ
ممبئی ۔ یکم ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) مرکز نے آج سونے کے تبادلہ کی اسکیم پیش کی۔ یہ ایک شفاف پلیٹ فام ہوگا جہاں سونے کے زیوروں کی خرید و فروخت ہوگی تاکہ بین الاقوامی بازار پر انحصار نہ کرنا پڑے۔ وزارت فینانس کے معتمد برائے معاشی امور شکتی کانتا داس نے کہا کہ یہ صرف ایک نظریہ ہے کہ کیا ہم سونے کے تبادلہ کے بارے میں غور کرسکتے ہیں؟ کیا اس کی تجارت شفاف ہوسکتی ہے ؟ ایک پلیٹ فام جہاں ہم فاضل سونا فروخت کرسکتے ہوں، ان افراد کو جسے اس کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ زیورات کیلئے بھی عارضی طور پر سونے کی ضرورت پڑتی ہے، اس لئے اسے درآمد کرنے کے بجائے ہم مقامی سطح پر خریداری کرسکتے ہیں۔ وہ تیسری ہندوستان بین الاقوامی بلین چوٹی کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے، جس کا اہتمام انڈین بلین اینڈ جویلیری اسوسی ایشن نے کیا تھا۔ حال ہی میں شروع کردہ سونے کے بدلے نقد رقم اسکیم کے بارے میں انہوں نے کہا کہ ابھی کوئی فیصلہ کرنا قبل از وقت ہوگا اور حکومت ان تمام ذرائع کے استعمال کی پابند ہے جن سے اس اسکیم کو کامیاب بنایا جاسکے ۔ انہوں نے کہا کہ عوام کو ترغیب دینا مشکل ہے کہ زیورات کے معاوضہ میں وہ نقد رقم حاصل کریں کیونکہ اس معاملہ سے جذبات بھی وابستہ ہوتے ہیں۔ نومبر کے اوائل میں مرکز نے سونے کی اسکیم ، خالص سونے کے بانڈ اور سونے کے معاوضہ میں نقد رقم کی اسکیم شروع کی تھی۔ نظریہ یہ تھا کہ سونے چاندی کی درآمدات پر قابو پایا جاسکے جس کی وجہ سے کافی زر مبادلہ کے ذخائر خرچ ہورہے ہیں۔ ان اسکیموں کا مقصد زیورات یا سونے کیلئے طلب کو کم کرنا بھی تھا۔

TOPPOPULARRECENT