Friday , January 19 2018
Home / Top Stories / سچن اور ریکھا کی مسلسل غیرحاضری پارلیمنٹ کی توہین

سچن اور ریکھا کی مسلسل غیرحاضری پارلیمنٹ کی توہین

نئی دہلی ۔ 8 اگست (سیاست ڈاٹ کام) کرکٹ کے سابق مایہ ناز کھلاڑی سچن تنڈولکر اور بالی ووڈ اداکارہ ریکھا پر آج راجیہ سبھا میں زبردست تنقید کی گئی کیونکہ دونوں نے اب تک بالترتیب تین اور سات بار ہی ایوان میں حاضری دی ہے جبکہ انہیں نامزد کئے ہوئے دو سال کا عرصہ گذر چکا ہے۔ سی پی آئی (ایم) کے پی راجیو نے اس موضوع کو اٹھایا اور یہ جاننے کی کوشش ک

نئی دہلی ۔ 8 اگست (سیاست ڈاٹ کام) کرکٹ کے سابق مایہ ناز کھلاڑی سچن تنڈولکر اور بالی ووڈ اداکارہ ریکھا پر آج راجیہ سبھا میں زبردست تنقید کی گئی کیونکہ دونوں نے اب تک بالترتیب تین اور سات بار ہی ایوان میں حاضری دی ہے جبکہ انہیں نامزد کئے ہوئے دو سال کا عرصہ گذر چکا ہے۔ سی پی آئی (ایم) کے پی راجیو نے اس موضوع کو اٹھایا اور یہ جاننے کی کوشش کی کہ مشہور و معروف ہستیوں کے ایوان سے غیرحاضر رہنے کی آخر کیا وجوہات ہیں؟ کیا انہوں نے غیرحاضر رہنے کی پہلے سے اجازت لے رکھی ہے؟ اس سوال پر نائب صدرنشین پی جے کورین نے کہا کہ راجیو نے یہ معاملہ پہلے بھی اٹھایا تھا لیکن کوئی خلاف ورزی نہیں ہوئی۔ دستورہند کے آرٹیکل 104 کے مطابق اگر کوئی بھی رکن پارلیمنٹ راجیہ سبھا یا لوک سبھا سے زائد از 60 ایام غیر حاضر رہتا ہے تو وہ نشست مخلوعہ تصور کی جاتی ہے۔ جہاں تک سچن تنڈولکر کا سوال ہے تو وہ 40 دنوں تک پارلیمنٹ سے غیرحاضر رہے اور ریکھا کی غیرحاضری کے ایام سچن سے بھی کم ہیں۔

کورین نے کہا کہ تنڈولکر کو ایوان بالا کے لئے اپریل 2012ء میں نامزد کیا گیا تھا اور انہوں نے تین دنوں تک سیشن میں شرکت کی۔ آخری بار تنڈولکر ایوان میں 19 فبروری 2019ء کو حاضر ہوئے تھے۔ ریکھا کے بارے میں کورین نے کہا کہ انہوں نے سات ایام تک سیشن میں شرکت کی اور آخری بار انہوں نے بھی 19 فبروری 2014ء کو شرکت کی تھی۔ یاد رہے کہ کل پارلیمنٹ کے باہر این سی پی لیڈر ڈی بی ترپاٹھی نے بھی اس موضوع کو اٹھایا تھا۔ کورین نے کہا کہ وہ سچن کو بحیثیت کرکٹر اور ریکھا کو بحیثیت ایکٹرس بیحد پسند کرتے ہیں لیکن میں صرف اتنا کہنا چاہوں گا کہ بحیثیت رکن راجیہ سبھا دونوں سے جو توقعات وابستہ تھیں ان کی تکمیل نہیں ہوئی۔ اپنے برتاؤ اور مسلسل غیرحاضری سے سچن اور ریکھا نے پارلیمنٹ اور دستورہند کی توہین کی ہے۔ ایسے لوگوں کو باوقار ایوان کے لئے سرے سے نامزد کیا ہی نہیں جانا چاہئے۔ مجھے ان دیگر ایم پیز پر ترس آتا ہے جنہوں نے سچن اور ریکھا کے ساتھ تصویریں کھنچوائیں۔ کچھ دیگر ارکان نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ سچن تنڈولکر کو راجیہ سبھا کے لئے زائد وقت دیئے جانے کی ضرورت ہے۔

TOPPOPULARRECENT