Thursday , November 23 2017
Home / شہر کی خبریں / سڑکوں، عوامی مقامات پر کچرا پھینکنے، پیشاب کرنے پر جرمانہ

سڑکوں، عوامی مقامات پر کچرا پھینکنے، پیشاب کرنے پر جرمانہ

موبائیل کورٹس کا قیام، برموقع چالان کیا جائے گا، کمشنر جی ایچ ایم سی کے احکامات
حیدرآباد 6 نومبر (ایجنسیز) گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن جی ایچ ایم سی، موبائیل عدالتوں کے قیام کا فیصلہ کیا تاکہ سڑکوں کے کنارے یا عوامی مقامات پر پیشاب کرنا، کوڑا کرکٹ پھینکنے والوں کے خلاف کارروائی کی جاسکے۔ یہ عدالتیں جن کو تمام جی ایچ ایم سی سرکلس میں قائم کرنے کی تجویز ہے موبائیل عدالتوں کے خطوط پر کارکردگی انجام دیں گے اور بغیر ٹکٹ سفر کرنے والے مسافرین کو جرمانہ عائد کریں گے۔ کمشنر جی ایچ ایم سی بی جناردھن ریڈی کو فرسٹ میٹرو پولیٹن مجسٹریٹ میونسپل کورٹ انجنیلو کی جانب سے اس سلسلہ میں ایک مکتوب تحریر کرتے ہوئے جی ایچ ا یم سی حدود میں موبائیل عدالتوں کے قیام کی خواہش کئے جانے کے بعد جی ایچ ایم سی نے موبائیل عدالتوں کے قیام کا فیصلہ لیا۔ فرسٹ میٹرو پولیٹن مجسٹریٹ انجنیلو نے کمشنر جی ایچ ایم سی کو مکتوب روانہ کرتے ہوئے اس بات کی درخواست کی تھی کہ وہ متعلقہ عہدیداروں کو موبائیل عدالتوں کے قیام اور کارپوریشن ایکٹ کے تحت مقدمات درج کرنے کی ہدایت دیں۔ جی ایچ ایم سی ذرائع نے بتایا کہ جیسا کہ سڑکوں کے کنارے عوامی مقامات پر پیشاب کرنا، کچرا پھینکنا ایک جرم ہے۔ جی ایچ ایم سی قانون کی خلاف ورزی کرنے والوں کو برموقع چالان کیا جائے گا۔ چالان 100 روپئے یا اس سے زائد ہوسکتا ہے۔ بتایا گیا ہے کہ سڑکوں خاص کر سڑک کے کنارے کچرا پھینکنے والے دوکانداروں، ٹھیلہ بنڈی رانوں، ہاکرس، ہوٹل، ریسٹورنٹس مالکین کے خلاف جرمانے عائد کئے جائیں گے۔ ذرائع نے بتایا کہ عوامی مقامات پر کچرا ڈالنے اور پیشاب کرنے والوں کے خلاف سخت قوانین کے تحت کارروائی کی جائے گی۔ واضح رہے کہ مرکزی حکومت نے ریاستوں کو ہدایت جاری کی کہ سڑکوں، عوامی مقامات پر کچرا ڈالنے والوں کے خلاف جرمانے عائد کئے جائیں۔ سڑکوں اور عوامی مقامات کو صاف ستھرا رکھنے کے اقدامات کئے جائیں گے۔ سوچھ بھارت مشن پروگرام کے تحت عوامی پیشاب خانوں کا قیام عمل میں لایا جائے گا جبکہ شہری علاقوں میں سوچھ بھارت مشن کو روبہ عمل لانے کی ضرورت ہے۔ بتایا گیا کہ قبل ازیں چند عارضی موبائیل کورٹس کا شہر میں قیام عمل میں لایا گیا تھا۔ تاہم چند مختلف وجوہات کی بناء موبائیل کورٹس کارکردگی انجام نہ سکے۔ چند سال قبل میونسپل کورٹ کی جانب سے غذائی تحفظ، معیاری ایکٹس اور جی ایچ ایم سی ایکٹ کے تحت مقدمات کی یکسوئی کی گئی تھی۔

TOPPOPULARRECENT