Thursday , January 17 2019

سکندرآباد کے بیشتر علاقے کچرا کنڈیوں کے مسائل سے پریشان

ارباب مجاز کچرے کی نکاسی کے لیے ڈبے فراہم کرنے میں ناکام
حیدرآباد ۔ 10 ۔ اپریل : ( سیاست نیوز ) : سکندرآباد کنٹونمنٹ بورڈ اپنے علاقوں میں کچرے کے ڈبے فراہم کرنے میں ناکام ہے ۔ حالانکہ بورڈ نے سکندرآباد کے کئی اہم علاقوں کی نشاندہی کی تھی جہاں کچرے کی بہتر انداز میں نکاسی کے لیے ڈبوں کی فراہمی کی گنجائش تھی لیکن ہنوز یہ ڈبے فراہم نہیں کئے گئے جس کی وجہ سے عوام کھلی اراضی پر کچرا پھینکنے پر مجبور ہے ۔ سکندرآباد کے کئی علاقوں میں کھلی اراضی پر کچرا پھینکنے سے علاقے کے مکینوں کو بدبو کے علاوہ بیماریوں کا خدشہ بھی لاحق ہے ۔ میڈیا نمائندے سے اظہار خیال کرتے ہوئے رسول پورہ کی مکین عائشہ مامون نے کہا ہمارے علاقے میں پہلے کچرے کی نکاسی کے لیے دو کچرا کنڈیاں تھیں جہاں ڈبے بھی موجود ہوتے تھے لیکن مذہبی مقام کے قریب موجود کچرا کنڈی کو ختم کرتے ہوئے علاقے کے لیے صرف ایک کچرا کنڈی کردی گئی ہے اور یہاں کھلی اراضی پر کچرا پھینکنے سے کئی مسائل پیدا ہورہے ہیں ۔ یہ کچرا کنڈی مین روڈ سے محلے میں داخل ہونے کے راستے پر ہے جس سے مسافرین کو بھی مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ۔ علاوہ ازیں سکندرآباد کے ایک اور قدیم علاقے کارخانہ کی مکین حمیرہ عرشیہ نے اسی طرح کی شکایت کی ہے کہ کچرے کے ڈبے نہ ہونے کی وجہ سے کھلی اراضی پر عوام کچرا ڈالنے پر مجبور ہیں جس سے صحت کے کئی مسائل پیدا ہورہے ہیں ۔ علاوہ ازیں سکندرآباد کنٹونمنٹ کے سپرنٹنڈنٹ بالا کرشنا نے کہا کہ ہر وارڈ کو کچرے کے 18 ڈبے فراہم کئے جاتے ہیں اور ہم نے مزید 100 ڈبوں کا آرڈر دیا ہے لیکن ہمیں صرف 50 ڈبے ہی ملے ہیں حالانکہ ہم نے کچرے کے ڈبوں کو اٹھانے والی 5 نئی گاڑیوں کا بھی آرڈر دیا ہے جو عنقریب حاصل ہوں گی ۔ جس کے بعد صورتحال میں بہتری آئے گی ۔۔

TOPPOPULARRECENT