Monday , November 20 2017
Home / ہندوستان / سکھ مخالف فسادات معاملہ :دو سابق ججوں کی کمیٹی

سکھ مخالف فسادات معاملہ :دو سابق ججوں کی کمیٹی

نئی دہلی، 16 اگست (سیاست ڈاٹ کام) سپریم کورٹ نے 1984 کے سکھ مخالف فسادات سے متعلق 199 معاملات کو بند کر دینے کے فیصلے کی تحقیقات کے لئے دو سابق ججوں کی کمیٹی قائم کی ہے ۔ جسٹس دیپک مشرا کی بنچ نے آج کہا کہ یہ کمیٹی فسادات سے متعلق ان 42 معاملات کی بھی جانچ کرے گی، جسے بند کرنے کی خصوصی تفتیشی ٹیم (ایس آئی ٹی) نے فیصلہ کیا ہے ۔ بنچ نے واضح کیا کہ کمیٹی یہ طے کرے گی کہ جن معاملات میں ایس آئی ٹی نے کلوزڈ رپورٹ داخل کردی ہے وہ مناسب ہے یا نہیں۔ عدالت نے کمیٹی کو سبھی معاملات کا جائزہ لے کر تین ماہ کے اندر اندر رپورٹ پیش کرنے کا بھی حکم دیا۔ اب اس معاملے کی سماعت 28 نومبر کو ہوگی۔ عدالت نے گزشتہ 24 مارچ کو مرکزی حکومت کو ان 199 مقدمات کی فائلیں پیش کرنے کا مرکزی حکومت کو حکم دیا تھا، جنہیں وزارت داخلہ کی طرف سے قائم ایس آئی ٹی نے بند کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔ ایس آئی ٹی کی سربراہی 1986 بیاچ کے انڈین پولیس سروس (آئی پی ایس) کے افسر پرمود استھانہ کر رہے ہیں، جبکہ ریٹائرڈ ضلع و سیشن جج راکیش کپور اور دہلی پولیس کے افسر کمار گیانیش اس کے رکن ہیں۔

TOPPOPULARRECENT