Friday , September 21 2018
Home / ہندوستان / سہارا کی 2 بلین ڈالر کی معاملت میں پراسرار موڑ

سہارا کی 2 بلین ڈالر کی معاملت میں پراسرار موڑ

نئی دہلی 5 فروری (سیاست ڈاٹ کام) بحران سے دوچار سہارا کی اپنے سربراہ سبرتا رائے کی ضمانت کے لئے فنڈس اکٹھا کرنے کی کوششوں میں پراسرار موڑ آگیا ہے کیونکہ بینک آف امریکہ نے ایک امریکی کمپنی کی جانب سے سہارا گروپ کو 2 بلین ڈالر کے مالیتی پیاکیج کی پیشکش کیلئے اُس کے بینکر ہونے کے دعوے کو جھوٹا قرار دیا ہے۔ ترجمان بینک آف امریکہ میرل ل

نئی دہلی 5 فروری (سیاست ڈاٹ کام) بحران سے دوچار سہارا کی اپنے سربراہ سبرتا رائے کی ضمانت کے لئے فنڈس اکٹھا کرنے کی کوششوں میں پراسرار موڑ آگیا ہے کیونکہ بینک آف امریکہ نے ایک امریکی کمپنی کی جانب سے سہارا گروپ کو 2 بلین ڈالر کے مالیتی پیاکیج کی پیشکش کیلئے اُس کے بینکر ہونے کے دعوے کو جھوٹا قرار دیا ہے۔ ترجمان بینک آف امریکہ میرل لنچ نے نیوز ایجنسی پی ٹی آئی کو بتایا کہ ہمارا اِس معاملہ سے کوئی ربط نہیں ہے۔ بینک کا دعویٰ سہارا گروپ کی جانب سے اِس غیر معروف ادارہ بنام ’’میراچ کیاپیٹل‘‘ امریکہ کے ساتھ کافی بڑھا چڑھا کر پیش کردہ معاملت کے بعد سامنے آئی ہے جس کا مقصد سبرتا رائے کی تہاڑ جیل سے رہائی کے لئے فنڈس اکٹھا کرنا ہے، جہاں وہ لگ بھگ ایک سال سے محروس ہیں۔ سپریم کورٹ حکمنامہ مورخہ 9 جنوری کے مطابق سہارا کے وکلاء نے عدالتی بنچ کے روبرو بینک آف امریکہ کی جانب سے سہارا انڈیا پریوار کو موسومہ 5 جنوری 2015 ء کا پیام پیش کیا جس میں بیان کیا گیا ہے کہ میراچ کیاپیٹل گروپ ایل ایل سی کی ہدایات کے تحت 1050 ملین ڈالر کی رقم بدستور روکی ہوئی ہے اور اِسے میراچ اور سہارا کے درمیان معاملتوں کے لئے 20 فروری 2015 ء کی تاریخ کے لئے مختص کیا گیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT