Tuesday , September 18 2018
Home / کھیل کی خبریں / سہ رخی سیریز کے فائنل میں جگہ مستحکم کرنے اُترے گا ہندوستان

سہ رخی سیریز کے فائنل میں جگہ مستحکم کرنے اُترے گا ہندوستان

کپتان روہت شرما کا ناقص فارم ٹیم کیلئے باعث تشویش ،انادکٹ ، چہل اور سندر سے بہتر مظاہرہ کی اُمید ،آج مقابلہ

کولمبو۔ 11مارچ (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان کل یہاں جب ندھاس ٹی 20-سہ رخی سیریز میں میزبان سری لنکا سے مقابلے کے لئے اترے گا تو جہاں اس کی نظر میچ جیتنے فائنل میں اپنی جگہ بنانے پر ہوگی تو وہیں اسے اپنے کپتنا کے بہتر فارم میں وپسی کی بھی توقع ہوگی ۔واضح رہے کہ قائم مقام کپتان روہت شرما کی خراب فارم جنوبی افریقہ سیریز سے ہی چل رہی ہے ،لہذا وہ کھیل میں اپنی اعتماد کی واپسی کے لئے تیزی سے رن جٹانا چاہیں گے یاد رہے ۔ندھاس ٹی۔20 سہ فریقی مقابلے میں سری لنکا، ہندوستان اور بنگلہ دیش کی ٹیموں نے ایک ایک جیت درج کی ہے اور سبھی ٹیم برابری پر ہیں۔ ہندوستان کو ا س سے قبل کے میچ میں سری لنکا سے پانچ وکٹ سے شکست کا مزہ چکھنا پڑا تھا لیکن دوسرے میچ میں اس نے بنگلہ دیش کو چھ وکٹ سے ہراکر خود کو مقابلے میں بنائے رکھا ہے ۔وہیں سری لنکا کو پچھلے میچ میں بنگلہ دیش کے ہاتھوں پانچ وکٹ سے چونکانے والی ہار جھیلنی پڑھی تھی جس سے وہ فائنل میں اپنے مقام کو پختہ کرنے سے چک گیا۔ پیر کو ہونے والے میچ میں اب دونوں ہی ٹیموں کے پاس فائنل میں جگہ پکی کرنے کے لئے برابری کا موقع ہے ۔ حالانکہ روہت شرما کی کپتانی والی نوجوان ٹیم اس میچ میں یقینی طور سے پچھلی غلطی سے سبق لیتے ہوئے اپنی ٹیم کو پٹری پر لوٹانے اور گزشتہ شکست کا بدلا چکانے کے لئے اترے گی۔سری لنکا نے اوپننگ میچ میں ہندوستانی ٹیم سے ملی 175 رن کے بڑے ہدف کو 9گیند رہتے ہوئے حاصل کرلیا تھا۔ اس میچ میں شکھر دھون نے 90 رن کی اننگ کھیلی تھی اور بلے بازوں نے بہترین رن بنائے تھے لیکن گیند باز بڑے اسکور کا دفاع کرنے میں ناکام رہے ۔ میڈیم پیسر گیند باز شردل ٹھاکر 3ء3 اوور میں 42 رن لٹاکر سب سے مہنگے گیند باز ثابت ہوئے تھے ۔ہندوستانی ٹیم کو اپنے حریف ٹیموں کو کمتر سمجھنے کی غلطی کا احساس ہوگیا ہوگا وہیں اس کے گیندبازی کا شعبہ کو بھی کافی بہتر کرنے کی ضرورت ہے ۔ محدود اووروں میں ٹیم کے بھروسہ مند اسپنر یوجوندر چہل حالانکہ سری لنکا کے خلاف اوپننگ میچ میں 37 رن پر دو وکٹ اور 18 سال کے نوجوان اسپنر واشنگٹن سندر 28 رن پر دو وکٹ لے کر سب سے کامیاب گیند باز رہے تھے وہیں بنگلہ دیش کے خلاف جادھو انادکت نے 38 رن پر تین وکٹ لے کر کافی متاثر کیا تھا جبکہ وجے شنکر نے بھی دو وکٹ لئے تھے ۔گزشتہ میچ میں بنگلہ دیش کو 139 رن کے چھوٹے اسکور پر روکنے کا سہرا بھی گیندبازوں کو جاتا ہے جنہوں نے گزشتہ میچ سے سبق لیتے ہوئے پہلے سے کہیں محتاط گیندبازی کی۔ ہندوستانی گیندبازوں پر پھر سے اس طرح کا مظاہرہ کرنے کا دباؤ رہے گا۔وہیں لمبے عرصے کے بعد واپسی کررہے آل راؤنڈر سریش رینا نے ابھی تک اپنی کارکردگی سے کوئی خاص متاثر نہیں کرسکے ہیں اور اور پچھلے دو میچوں میں ایک رن اور 28 رن کی اننگ کھیلی ہے لیکن کوئی وکٹ حاصل نہیں کرسکے ۔ گیندبازوں میں پھر سے جے دیو انادکت، چہل اور سندر سے اچھے مظاہرہ کرنے کی امید ہوگی جبکہ باقی نوجوان کھلاڑیوں پر بھی اچھے مظاہرے سے خود کو ثابت کرنے کا دباؤ رہے گا۔بلے بازوں میں کپتان روہت شرما سے بھی بڑے اسکور کی امید رہے گی جنہوں نے گزشتہ دو میچوں میں قابل ذکر اسکور کرنے میں ناکام رہے ۔ انہوں نے سری لنکا کے خلاف صفر اور 17 رن کی اننگ کھیل ہے ۔ رشبھ پنت نے بھی گزشتہ میچ میں سات ہی رن بنائے تھے اوران سے امید رہے گی کہ سری لنکا کے خلاف بہترین مظاہرہ کریں۔دوسری طرف سری لنکا اپنے گزشتہ میچ میں 214 رن کا بڑا اسکور کھڑا کرچکے ہیں لیکن اس کے باوجود اس کے گیندباز اس کا بچاؤ نہیں کرسکے ۔ اپنی گھریلو زمین پر ندھاس ٹرافی میں سری لنکائی کھلاڑی بھی ہر حال میں فائنل میں اپنی جگہ پکی کرنے کی کوشش کریں گے ۔سری لنکائی ٹیم مین کشل مینڈس، دلروان پریرا، کپتان دنیش چنڈی مل، اپل تھرنگا جیسے اچھے بلے بازاور دنشکا گنتھالیکا، تشارا پریرا اور نوان پردیپ جیسے کمال کے گیند باز موجود ہیں۔

TOPPOPULARRECENT