Tuesday , December 12 2017
Home / ہندوستان / سیاستدان کے قبضے سے 8.9 لاکھ روپئے کی جعلی کرنسی ضبط

سیاستدان کے قبضے سے 8.9 لاکھ روپئے کی جعلی کرنسی ضبط

ممبئی۔11 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) ڈائرکٹوریٹ آف ریونیو انٹلیجنس (ڈی آر آئی) نے ممبئی کے ایک مقامی سیاستداں کے قبضے سے 8.9 لاکھ روپئے مالیت کی جعلی کرنسی نوٹس ضبط کرلیے ہیں۔ ڈی آر آئی کے عہدیداروں نے کہا کہ یہ کرنسی بنگلہ دیش میں طبع کرائی گئی اور ہندوستان میں براہ شمال مشرقی خطہ پہنچائی گئی۔ عہدیداروں کے مطابق جعلی نوٹوں کو اصلی کرنسی کے ’سکیوریٹی فیچر‘کی نقل کرتے ہوئے چھاپا گیا اور اس کی شناخت کرنا بہت مشکل ہے۔ ضبط شدہ کرنسی نوٹوں میں 500 کی قدر والے نوٹ ہی ہیں۔ اصلی کرنسی نوٹوں میں موجود 27 ہائی سکیوریٹی فیوچرس کے منجملہ ضبط شدہ نوٹوں میں ایسے تقریباً 15 فیوچرس پائے گئے جو آر بی آئی نے طبع کرائے۔ قبل ازیں اسی طرح کی جعلی نوٹوں میں تقریباً 7 سکیوریٹی فیوچرس پائے گئے تھے۔ ڈی آر آئی موجودہ طور پر ناسک پرنٹنگ پریس سے ان کرنسی نوٹوں کے بارے میں فارنسک رپورٹ کا منتظر ہے۔ دریں اثناء کانگریس پارٹی سے وابستہ عمران عالم شیخ اور دو دیگر افراد کو ممبئی میں جعلی کرنسی ریاکٹ چلانے کی پاداش میں ڈی آر آئی نے گرفتار کرلیا ہے۔ شیخ بتایا جاتا ہے کہ کانگریس پارٹی کی ڈسٹرکٹ کمیٹی کا جنرل سکریٹری ہے۔ ڈی آر آئی ذرائع سے معلوم ہوا کہ تفتیش کے دوران عالم شیخ نے رونا شروع کردیا۔ تاہم، اس کا کوئی مجرمانہ پس منظر نہیں ہے اور نہ وہ اس ریاکٹ کے پس پردہ کارفرما سرغنہ ہے۔ اس کا بھائی جو شیوسینا پارٹی کے لیے کام کرتا ہے، وہ بھی کسی طرح ملوث معلوم نہیں ہوا۔ اسی نوعیت کی ایک تبدیلی میں ایک اور رکن ریاکٹ شیواجی رائو کھڈیکر کو پونے پولیس نے پکڑلیا ہے۔ ڈی آر آئی کے عہدیدار پونے جاکر اس سے تفتیش کریں گے اور جعلی کرنسی کی بقیہ کھیپ کا پتہ چلائیں گے۔

 

TOPPOPULARRECENT