Wednesday , June 20 2018
Home / شہر کی خبریں / سیاست ملت فنڈ سے پچاس طالبات کو فیس کی امداد

سیاست ملت فنڈ سے پچاس طالبات کو فیس کی امداد

ایڈیٹر سیاست جناب زاہد علی خاں سے 27500 روپیوں کی منظوری کے بعد اجرائی

ایڈیٹر سیاست جناب زاہد علی خاں سے 27500 روپیوں کی منظوری کے بعد اجرائی
حیدرآباد ۔ 23 ۔ مارچ : ( سیاست نیوز ) : دونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد سے تعلق رکھنے والی ایسی 50 لڑکیوں کی امتحانی فیس ادارہ سیاست کی جانب سے ادا کی گئی جو کہ امتحانی فیس ادا کرنے سے قاصر تھیں ۔ اوپن ایس ایس سی امتحانات میں شرکت کررہی ان طالبات کے لیے جملہ 27500 روپئے بطور امتحانی فیس جناب زاہد علی خاں ایڈیٹر روزنامہ سیاست نے ملت فنڈ سے منظوری کے بعد جمع کروادی گئی ۔ مہیتا نامی غیر سرکاری تنظیم کی جانب سے شہر کے مختلف مقامات بالخصوص پسماندہ علاقوں سے تعلق رکھنے والے ایسے طلبہ جو کہ معاشی مسائل کی بنیاد پر ترک تعلیم کرتے ہوئے مزدوری کررہے تھے یا پھر اوقات ضائع کررہے تھے ان کی نشاندہی کرتے ہوئے انہیں اوپن اسکول کے ذریعہ سلسلہ تعلیم جاری رکھنے کے لیے راغب کیا گیا اور اب طلبہ کے امتحانات قریب تھے لیکن تقریبا 50 ایسی طالبات تھیں جو کہ امتحانی فیس بھی ادا کرنے کے موقف میں نہیں تھیں ۔ ان کے مسئلہ کے ساتھ محترمہ رفیعہ نوشین ، جناب ظہیر الدین علی خاں منیجنگ ایڈیٹر روزنامہ سیاست سے رجوع ہوئیں جس پر انہوں نے جناب زاہد علی خاں سے مشاورت کے بعد ان لڑکیوں کی امتحانی فیس ادا کرنے کا فیصلہ کیا ۔ محترمہ رفیعہ نوشین کے بموجب پرانے شہر کے علاوہ شہر کے دیگر علاقوں میں موجود سلم میں بسنے والے خاندان تعلیم کی اہمیت کو سمجھتے ہوئے بھی بچوں کے سلسلہ تعلیم کو جاری رکھنے سے قاصر ہیں چونکہ امتحانی فیس ادا کرتے وقت ان کے پاس اتنی رقم بھی نہیں ہوتی کہ وہ امتحانی فیس ادا کرسکیں ۔ ان حالات میں ترک تعلیم کرنے والے طلبہ میں مایوسی پیدا ہوجاتی ہے جب کہ ایسے طلبہ میں کئی ذہین طلبہ بھی شامل ہیں جن کی تعلیمی ترقی معاشی پسماندگی کو دور کرسکتی ہے ۔ اسی لیے مہیتا کی جانب سے ترک تعلیم کرنے والوں کو دوبارہ تعلیمی میدان سے جوڑنے کی کوشش کی جاتی ہے ۔ ان ہی کوششوں کے دوران طالبات کی ان مجبوریوں کا احساس ہوا کہ وہ امتحانی فیس کی ادائیگی سے بھی قاصر ہیں ۔ ادارہ سیاست کی جانب سے جن 50 طالبات کی فیس کی ادائیگی عمل میں لائی گئی وہ بھی نہایت ذہین ہیں لیکن ترک تعلیم پر مجبور ہوگئی تھیں ۔ مہیتا کے بموجب اب تک مہیتا کی جانب سے 1085 بچوں کو اوپن اسکول طرز تعلیم کے ذریعہ دوبارہ خواندگی کی جانب راغب کروایا گیا ہے لیکن ان میں سے صرف 25 فیصد طلبہ ایسے ہیں جو امتحانی فیس ادا کرسکتے ہیں ان کے معاشی حالات کو دیکھتے ہوئے مختلف اداروں کی جانب سے ان کی فیس کی ادائیگی کروائی جاتی ہے تاکہ ان کے سلسلہ تعلیم کا از سر نو آغاز ہوسکے ۔ جناب ظہیر الدین علی خاں منیجنگ ایڈیٹر روزنامہ سیاست کی ہدایت پر جناب سید خالد محی الدین اسد انچارج سیاست ہیلپ لائن نے مہیتا کے دیگر ذمہ داران کے ہمراہ پہنچ کر ان 50 طالبات کی امتحانی فیس ادا کردی جو امتحانی فیس ادا کرنے سے قاصر تھیں ۔ مہیتا کے کارکن محمد حفیظ الدین ، محمد طاہر ، ذکیہ اور پدمالتا بھی ترک تعلیم کرنے والے طلبہ کے سلسلہ تعلیم کو دوبارہ شروع کرنے کی اس مہم میں سرگرم حصہ لے رہے ہیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT