Tuesday , November 13 2018
Home / سیاسیات / سیاست کو گندہ کام نہ سمجھیں ، نوجوان سیاست میں حصہ لیں

سیاست کو گندہ کام نہ سمجھیں ، نوجوان سیاست میں حصہ لیں

انڈیا ٹوڈے مائنڈ راکس یوتھ چوٹی کانفرنس ۔کانگریس ، بی جے پی ، عآپ نمائندوں کا خطاب
نئی دہلی 15 ستمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) بی جے پی ‘ کانگریس اورعام آدمی پارٹی نے نوجوانوں سے کہا ہے کہ وہ یہ خیال ترک کردیں کہ سیاست ایک گندہ کام ہے ۔ اس کے علاوہ نوجوانوں سے اپیل کی گئی کہ وہ ملک کو آگے بڑھانے کیلئے عوامی زندگی میں قدم رکھیں۔ ان تینوں پارٹیوں کے ترجمانوں سمبت پاترا ( بی جے پی ) پرینکا چترویدی ( کانگریس ) اور راگھو چڈھا ( عآپ ) نے انڈیا ٹوڈے مائنڈ راکس یوتھ چوٹی کانفرنس کے افتتاحی سشن میں ان خیالات کا اظہار کیا ۔ نوجوانوں کو عوامی زندگی میں قدم رکھنے کا مشورہ دیتے ہوئے سمبت پاترا نے کہا کہ ایک مشہور کہاوت ہے کہ اگر اچھے لوگ سیاست میں نہیں آئیں گے تو پھر انہیں غلط حکمرانوں کو بھگتنے کیلئے تیار رہنا پڑے گا ۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم نریندرمودی کی جو توانائی ہے اس کے نتیجہ میں نوجوان متاثر ہو رہے ہیں۔ پرینکا چترویدی نے کہا کہ نوجوانوں کو چاہئے کہ اگر وہ چاہتے ہیںکہ سیاستدان ان کی زبان بولیں تو پھر وہ سیاست سے جڑ جائیں۔ انہوں نے کہا کہ ہر سیاست داں کو نوجوانوں کیلئے نمونہ بننا چاہئے اور نوجوانوں کی خواہشات کی تکمیل کیلئے آگے آنا چاہئے اور یہی بات کانگریس پارٹی وقفہ وقفہ سے کہتی آئی ہے۔ عام آدمی پارٹی کے راگھو چڈھا نے کہا کہ یہ عام رجحان ہے کہ لوگ پرکشش ، معیاری اور روایتی کیریئر کی خواہش کرتے ہیں تاکہ اُن کے بچے ڈاکٹر ، انجینئر اور چارٹرڈ اکاؤنٹنٹ بن سکیں۔ ان کا خیال ہے کہ سیاست ایک گندہ کام ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان کی آبادی کا 65% حصہ 35 سال سے کم عمر والوں کا ہے۔ اس کے علاوہ 2020ء تک ہندوستان کی اوسط عمر 29 سال ہوجائے گی، ایسے میں نوجوانوں کیلئے ضروری ہے کہ وہ آگے آئیں اور سیاست میں حصہ لیں۔ موروثی سیاست کے تعلق سے سندیب پاترا نے کہا کہ ایسی سیاست عام افراد کو قومی دھارے کی سیاست میں جگہ نہیں دیتی۔ ترقیاتی سیاست کی راہ میں اصل رکاوٹ موروثی سیاست ہے۔ انہوں نے کہا کہ جس دن راہول گاندھی پیدا ہوئے تھے ، اسی دن کانگریس ورکرس نے انہیں مستقبل کا پارٹی صدر سمجھنا شروع کردیا تھا اور یہی موروثی سیاست کی تشریح ہے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی صدر امیت شاہ کی شروعات معمولی رہی ۔ بی جے پی میں شمولیت سے پہلے وہ پوسٹرس لگایا کرتے تھے، پھر وہ پارٹی کے صدارتی عہدہ تک پہنچ گئے۔ پرینکا چترویدی نے کہا کہ نریندر مودی واحد فرد نہیں ہیں جو نچلی سطح تک اٹھ کر وزیراعظم بنے۔ لال بہادر شاستری اور منموہن سنگھ کی شروعات بھی معمولی رہی تھی۔ چڈھا نے کہا کہ عام آدمی پارٹی ہمیشہ سے موروثی سیاست کی شدت سے مخالفت کرتی رہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT