Saturday , November 25 2017
Home / شہر کی خبریں / سیاست کی جانب سے مسلم لاوارث نعشوں کی تدفین کا ہندسہ 3500 سے تجاوز

سیاست کی جانب سے مسلم لاوارث نعشوں کی تدفین کا ہندسہ 3500 سے تجاوز

دواخانہ عثمانیہ میں نعشوں کی نماز جنازہ مفتی صادق محی الدین نے پڑھائی ، کارخیر کی ستائش کی
حیدرآباد ۔ 12 ۔ فروری : ( راست ) : مفتی صادق محی الدین فہیم نے کہا حق سبحانہ تعالی نے انسان کو اپنی معرفت اور عبادت کے لیے پیدا فرمایا ۔ یہ زندگی انسان کے لیے ایک امتحان ہے ۔ اللہ پاک نے موت اور حیات کو پیدا فرمایا تاکہ ان سے امتحان لیا جاسکے ۔ ہر پیدا ہونے والے کو ایک دن مرنا ہے ۔ گویا انسان حیات کی نعمت لے کر دنیا کے دروازے سے داخل ہوا اور دوسرے دروازے سے آخرت کی دنیا میں پہنچ گیا ۔ نوح علیہ السلام کی موت کے وقت ان سے جب دریافت کیا گیا کہ آپ نے زندگی کو کیسے پایا تو آپ نے فرمایا اے لوگو میں ایک دروازے سے داخل ہوا اور دوسرے دروازے سے نکل گیا ۔ جب کہ اللہ پاک نے ان کو کچھ کم ہزار سال کی زندگی دی تھی ۔ بلاشبہ صاحب ثروت لوگوں کو ان کی تجہیز و تکفین کا معاملہ تو آسان ہوتا ہے ۔ مگر وہ لوگ جن کے وارث نہیں ہوتے اور دواخانوں میں پڑے ہوئے اپنی آخری آرام گاہ کا انتظار کرتے رہتے ہیں ، ان کو غیر اسلامی طریقہ پر دفن کردیا جاتا تھا یا پھر جلا دیا جاتا تھا ۔ اللہ پاک محترم زاہد علی خاں کو جزائے خیر دے اور اس میں تعاون کرنے والوں کو اجر عظیم عطا فرمائے ۔ جناب سید عبدالمنان نے کہا ادارہ سیاست کے کام کو دیکھ کر پرمیش چندرا فاونڈیشن قائم ہوا اور غیر مسلم نعشوں کی آخری رسومات انجام دینے لگا ۔ اور حکومت ایک نعش پر کچھ رقم بھی منظور کی جب اس طرف جناب زاہد علی خاں صاحب کو توجہ دلائی گئی تو آپ نے فرمایا کہ میں اس نیک کام میں حکومت کو شریک کرنا نہیں چاہتا ۔ اس طرح ملت فنڈ میں تعاون کرنے والوں کی ایک بڑی تعداد اس کار خیر میں شریک ہوگی ۔ بلا شبہ ملت فنڈ میں تعاون کرنے والے حضرات اس نیک کام میں شریک نہیں رہتے ہوئے بھی اپنی موجودگی کا احساس دلاتے ہیں کیوں کہ ملت فنڈ کے ہی ذریعہ تدفین کا سلسلہ جاری ہے یہ ہندسہ اللہ پاک کے فضل و کرم سے 3500 سے زیادہ تک پہنچ گیا ۔ چنانچہ آج بروز جمعہ صبح 8 بجے مسلم نعشوں کی نماز جنازہ حضرت مفتی صادق محی الدین نے دواخانہ عثمانیہ ہی میں پڑھائی ۔ اور مہیشورم منڈل لاوی لال ولیج میں تدفین عمل میں لائی گئی ۔ آج قبرستان میں تدفین کے وقت قابل ذکر جناب محمد رحمت علی ، محمد امین عرف زبیر ، عبدالجلیل ، سید علی ہاشمی ، سید کلیم علی ہاشمی نے تدفین میں حصہ لیا اور نماز جنازہ میں جنرل منیجر روزنامہ سیاست جناب میر شجاعت علی اور سید زاہد حسین اور عابد بھائی بھی شریک تھے ۔۔

TOPPOPULARRECENT