Friday , September 21 2018
Home / سیاسیات / سیاسی حلقوں میں افطار پارٹیاں ندارد بی جے پی حکومت کو نقصان کا اندیشہ

سیاسی حلقوں میں افطار پارٹیاں ندارد بی جے پی حکومت کو نقصان کا اندیشہ

نئی دہلی ، 25 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) طویل عرصے سے سیاسی نٹ ورک کے کیلنڈر میں معمول بن جانے کے بعد افطار پارٹیاں اب یکاک اس رمضان دہلی کے سیاسی حلقوں سے غائب ہوچلی ہیں۔ صرف صدرجمہوریہ پرنب مکرجی نے دوشنبہ کو قابل ذکر افطار پارٹی کی میزبانی کی، لیکن وزیراعظم نریندر مودی اور سینئر کابینی وزراء اس معاملے میں گریزاں رہے ہیں۔ سرکاری سرپرس

نئی دہلی ، 25 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) طویل عرصے سے سیاسی نٹ ورک کے کیلنڈر میں معمول بن جانے کے بعد افطار پارٹیاں اب یکاک اس رمضان دہلی کے سیاسی حلقوں سے غائب ہوچلی ہیں۔ صرف صدرجمہوریہ پرنب مکرجی نے دوشنبہ کو قابل ذکر افطار پارٹی کی میزبانی کی، لیکن وزیراعظم نریندر مودی اور سینئر کابینی وزراء اس معاملے میں گریزاں رہے ہیں۔ سرکاری سرپرستی والی پارٹیاں تو چھوڑئیے، کانگریس نے بھی اس مرتبہ کوئی افطار پارٹی کا اہتمام نہیں کیا ہے۔ ایک سماجی تجزیہ نگار شیو وشواناتھن کی رائے میں سیاسی گوشوں میں افطار پارٹیوں کی تعداد میں گراوٹ بی جے پی حکومت کیلئے نقصان کی بات ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ افطار پارٹیاں اس ملک کی سب سے بڑی اقلیت کے مذہبی جذبات و احساسات کو سمجھنے کا ایک ذریعہ ہیں، جسے اٹل بہاری واجپائی نے تک سمجھا اور جاری رکھا تھا۔

TOPPOPULARRECENT