Tuesday , January 16 2018
Home / اضلاع کی خبریں / سیاسی شعبہ میں مسلمانوں سے ناانصافی

سیاسی شعبہ میں مسلمانوں سے ناانصافی

کریم نگر۔/5اپریل، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) حالیہ منعقدہ میونسپل کارپوریشن، نگر پنچایتوں کے چناؤ میں کانگریس پارٹی نے جن امیدواروں کو ٹکٹ دیا ہے اس کا جائزہ لیا جائے تو مسلمانوں کے ساتھ کافی ناانصافی ہوئی ہے۔ بالخصوص کریم نگر مستقر میں 50 ڈیویژنوں میں صرف 4ڈیویژنس میں مسلم طبقات کو اتارا گیا ہے۔ حالانکہ 10تا 15 ڈیویِژنس میں مسلم امیدوار کی

کریم نگر۔/5اپریل، ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) حالیہ منعقدہ میونسپل کارپوریشن، نگر پنچایتوں کے چناؤ میں کانگریس پارٹی نے جن امیدواروں کو ٹکٹ دیا ہے اس کا جائزہ لیا جائے تو مسلمانوں کے ساتھ کافی ناانصافی ہوئی ہے۔ بالخصوص کریم نگر مستقر میں 50 ڈیویژنوں میں صرف 4ڈیویژنس میں مسلم طبقات کو اتارا گیا ہے۔ حالانکہ 10تا 15 ڈیویِژنس میں مسلم امیدوار کی کامیابی کے بہت زیادہ امکانات تھے اس کے باوجود صرف چار مسلم امیدواروں کو موقع دیا جانا انتہائی بدبختانہ ہے۔ سابق صدر وقف بورڈ کریم نگر محسن احمد خان نے ایک صحافتی اعلامیہ جاری کرتے ہوئے یہ بات کہی۔ سیاسی شعبہ میں آگے بڑھنے کی پہلی سیڑھی پر ہی مسلمانوں کو قدم رکھنے نہیں دیا گیا جو بدبختی ہے۔ سابق میں اس طرح کئی موقعوں پر مسلمانوں کے ساتھ ناانصافی ہوئی ہے۔ مسلمانوں کو صرف ووٹ کے حصول کیلئے مختلف قسم قسم سے بہلایا جاتا رہا ہے اور نامزد عہدوں پر بھی مسلمانوں کو فائز نہیں کیا جارہا ہے۔ سیکولر اپرٹی ہونے کا ڈھنڈورا پیٹا جاتا ہے لیکن سماجی انصاف کیلئے عمل ندرد ہے۔ ضلع میں 13اسمبلی حلقہ جات میں جن اسمبلی حلقوں میں مسلم ووٹرس کی کافی اچھی تعداد ہے لیکن آج تک کسی مسلم امیدوار کو ٹکٹ نہیں دیا گیا۔بالخصوص کریم نگر حلقہ اسمبلی میں 60 ہزار سے زائد مسلم رائے دہندے ہیں۔ کانگریس اگر کسی مسلم امیدوار کو چناؤ میں ٹکٹ دے تو اس کی کامیابی کے قوی امکانات ہیں۔ حقائق کی جانکاری رکھتے ہوئے بھی مسلمانوں کو ٹکٹ نہ دیا جانا جس سے صاف ظاہر ہے کہ کانگریس نہیں چاہتی کہ کوئی مسلمان سیاسی شعبہ میں آگے بڑھے۔ محسن احمد خان سابق صدر ضلع وقف بورڈ کریم نگر، حافظ سید شکیل الرحمن سابق نائب صدر وقف بورڈ، ظفر شاہ خان، مسعود خان، محمد ایوب خان، سید قدیر، محمد خواجہ معین الدین، سید امان، سید زبیر، منیر اقبال، سید معین الدین سابق وقف بورڈ ارکان نے مشترکہ بیان جاری کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ اگر کانگریس واقعی سیکولر ہے اور جمہوری طرز پر اس کا ایقان ہے تو مذہبی بھید بھاؤ کی سوچ نہیں ہے تو اسمبلی حلقوں کے چناؤ میں کم از کم تین اسمبلی حلقوں پر جہاں کامیابی کے قوی امکانات ہیں مسلمانوں کو ٹکٹ دیا جائے۔

TOPPOPULARRECENT