Thursday , November 23 2017
Home / Top Stories / سیاہ فام افراد پر فائرنگ کا انتقام، 5 امریکی پولیس آفیسرز کو گولی مار دی گئی

سیاہ فام افراد پر فائرنگ کا انتقام، 5 امریکی پولیس آفیسرز کو گولی مار دی گئی

ہیوسٹن ، 8 جولائی ( سیاست ڈاٹ کام ) سیاہ فام آدمیوں پر اس ہفتے پولیس کی مہلک فائرنگ کے خلاف مظاہرے کے دوران امریکی شہر ڈلاس میں ’’گھات لگاکر ‘‘ فائرنگ میں پانچ پولیس آفیسرز کو ہلاک اور سات دیگر کو زخمی کردیا گیا، جو اِس ملک میں قانون نافذ کرنے والوں پر 9/11 کے بعد سے مہلک ترین حملہ ہے۔ اصل مشتبہ شخص کی شناخت 25 سالہ میکا جانسن کی حیثیت کی گئی، جسے بعدازاں دھماکہ میں ہلاک کردیا گیا جو عہدیداروں کے بھیجے گئے روبوٹ کنٹرول والے دھماکو آلہ کے ذریعہ کیا گیا۔ شہر کے اندرونی علاقے میں جہاں ہوٹلوں اور رسٹورنٹس کی بہتات ہے، ایک مصروف گوشہ کے قریب فائرنگ شروع ہوئی۔ سربراہ ڈلاس پولیس ڈیوڈ براؤن نے میڈیا کو بتایا کہ گزشتہ شب دیر گئے دو اِسنائپرز نے کسی اونچے مقام سے ’’گھات لگاکر‘‘ فائرنگ کردی۔ اس فائرنگ سے جسے پولیس نے ’’دہشت گردانہ واقعہ‘‘ قرار دیا، سینکڑوں لوگوں کو سڑکوں پر افراتفری کے عالم میں بھاگتے دیکھا گیا۔ براؤن نے کہا کہ آفیسرز نے ایک مشتبہ فرد کو گھیرا اور کئی گھنٹے تک اُس سے معاملے کی پُرامن یکسوئی کی کوشش کی مگر بات چیت ناکام ہوگئی۔ عہدہ دار نے کہا کہ مشتبہ ملزم نے انھیں بتایا کہ وہ پولیس آفیسرز کی جانب سے حالیہ فائرنگ پر دکھی ہے۔ ’’مشتبہ ملزم نے کہا کہ وہ سفید فام لوگوں بالخصوص وائیٹ آفیسرز کو ہلاک کرنا چاہتا ہے۔‘‘

TOPPOPULARRECENT