Friday , November 24 2017
Home / Top Stories / سی پی آئی (ایم) کے دفتر پر بی جے پی کا پُرتشدد مظاہرہ

سی پی آئی (ایم) کے دفتر پر بی جے پی کا پُرتشدد مظاہرہ

کمیونسٹ کارکن بھی مقابلہ کیلئے دفتر کے باہر نکل گئے ‘ پولیس سے دھکم پیل‘ 600 گرفتار
نئی دہلی ۔22مئی ( سیاست ڈاٹ کام ) بی جے پی ورکروں  نے کیرالا میں بائیں بازو محاذ کی انتخابی کامیابی کے جشن کے دوران اس کے حامیوں کے ہاتھوں اپنے ( بی جے پی کے ) ایک کارکن کے مبینہ قتل کے خلاف نئی دہلی میں آج سی پی آئی ( ایم) کے ہیڈ کوارٹرز پر احتجاجی مظاہرہ کیا ۔ اس موقع پر پولیس کے محاصرہ کو توڑتے ہوئے بی جے پی کے برہم کارکنوں نے سی پی آئی ( ایم)  کے سائن بورڈ کو بھی نقصان پہنچایا ۔ کیرالا میں انتخابات کے دوران بی جے پی نے اپنے کارکنوں پر مبینہ حملوں کے خلاف سی پی آئی ( ایم) کو سخت تنقیدوں کا نشانہ بنایا ہے ۔ دہلی کے گول مارکٹ علاقہ میں واقع سی پی آئی( ایم) کے صدر دفتر کی حفاظت کیلئے پولیس کی طرف سے سخت ترین سیکیورٹی انتظامات کئے تھے ۔ بی جے پی کارکنوں کے مظاہرہ کے دوران سی پی آئی ( ایم) کے کارکن بھی ان سے مقابلہ کیلئے دفتر سے باہر نکل آئے جس کے نتیجہ میں بی جے پی اور سی پی آئی ( ایم) کارکنوں کے درمیان ہاتھا  پائی بھی ہوئی ۔ علاوہ ازیں حفاظتی محاصرہ توڑنجے کی کوشش کے دوران بی جے پی کارکنوں اور پولیس میں دھکم پیل ہوئی ۔ بی جے پی کارکنوں نے سی پی آئی ( ایم) کے دفتر پر لگے ہوئے سائن بورڈس کو بھی نقصان پہنچایا ۔ اس دوران پولیس نے ایک دوسرے سے متصادم کمیونسٹ اور بی جے پی کارکنوں کو علحدہ کیا تاہم تصادم میں کوئی زخمی نہیں ہوا ۔ ڈپٹی کمشنر پولیس ( نئی دہلی ) جتن نروالی نے کہا کہ ’’ مختلف قانونی دفعات کے تحت 600کارکنوں کو تحویل میں لیا گیا اور صورتحال قابو میں ہے ‘‘ ۔ بی جے پی یونٹ کے ترجمان پراوین کمار نے دعویٰ کیا کہ کارکنوں کا احتجاج پُرامن تھا ۔ ’’ پولیس نے ہمارے قائدین اور کارکنوں کو حراست میں لیا لیکن تشدد پر آمادہ سی پی آئی ( ایم) کارکنوں کو حراست میں نہیں لیا گیا ۔ دہلی بی جے پی یونٹ کے انچارج شیام جاجو اور صدرنشین اپادھیائے کو بھی حراست میں لیا گیا ‘‘ ۔

TOPPOPULARRECENT