Tuesday , April 24 2018
Home / پاکستان / : سی پی ای سی پراجکٹس : پاکستان امریکی ڈالرس کی طرح چینی یوان کے آزادانہ استعمال کا مخالف

: سی پی ای سی پراجکٹس : پاکستان امریکی ڈالرس کی طرح چینی یوان کے آزادانہ استعمال کا مخالف

 

اسلام آباد ۔ 21 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان نے امریکی ڈالرس کی طرز پر ملک میں چینی یوان کے بھی آزادانہ استعمال کی اجازت دینے سے انکار کردیا جبکہ دونوں ممالک کے افسران نے آج چائنا پاکستان اکنامک کاریڈو  کے طویل مدتی ترقیاتی منصوبہ پر کسی فیصلہ سازی کیلئے بات چیت کی۔ پاکستان اور چین کے سینئر افسران کی کل ہوئی ملاقات میں یہ طئے کیا گیا تھا کہ مالی اور دیگر رکاوٹوں کے باوجود بھی اس پراجکٹ پر پیشرفت کی جانی چاہئے خصوصی طور پر اسپیشل اکنامک (انڈسٹریل زونس (SEZs) اور ان کے ساتھ ساتھ کچھ اہم ریل، الیکٹریسٹی اور روڈ پراجکٹس پر بھی پیشرفت ضروری ہے۔ اس موقع پر انگریزی اخبار ڈان نے بھی ایک سینئر سرکاری افسر کے حوالے سے بتایا کہ پاکستان گوادر میں چینی کرنسی (یوان) کے آزادانہ استعمال کے حق میں نہیں ہے جیساکہ امریکی ڈالرس کے ساتھ ہورہا ہے اور پاکستان کے اس فیصلہ نے دورہ پر آئے چینی عہدیداروں کو کافی مایوس کیا ہے۔ سرکاری عہدیدار کے مطابق پاکستان کے کسی بھی حصہ میں امریکی ڈالر کی طرح چینی یوان کے استعمال یا زرمبادلہ باہمی رضامندی کی بنیاد پر ہونا چاہئے۔ انہوں نے مزید کہاکہ سی پی ای سی کی جوائنٹ کوآپریشن کمیٹی (JCC) کے انسٹی ٹیوشنل انتظامات کی بنیاد پر اس موضوع پر دوبارہ بات چیت ہوگی اور اس اجلاس کی صدارت وزیرداخلہ احسان اقبال جن کے پاس منصوبہ بندی اور ڈیولپمنٹ ریفارمس کا قلمدان بھی ہے اور نائب صدرنشین نیشنل ڈیولپمنٹ اینڈ ریفارمس کمیشن آف چائنا (NDRC) وانگ ژیاؤ ٹاؤ کریں گے۔ عہدیدار نے اپنی بات جاری رکھتے ہوئے کہا کہ کراچی سرکلر ریلوے (KCR) کا تخمینہ 3.5 بلین ڈالرس ہے اور اس کو سی پی ای سی کا حصہ بنانے کیلئے دونوں ممالک کے درمیان پائے جانے والے بعض تنازعات اہم رکاوٹ ہیں۔ لہٰذا فی الحال اسے التواء میں رکھا جائے گا۔ دوسری طرف معتبر ذرائع سے یہ بھی پتہ چلا ہیکہ دونوں ممالک کے درمیان 8.5 بلین ڈالرس کے مصارف سے کراچی۔ لاہور۔ پشاور ریلوے لائن پر موجود تنازعات کو ختم کردیا گیا ہے۔ تبادلہ خیال کے مثبت نتائج سامنے آئے ہیں اور توقع ہیکہ دونوں ممالک پاور پراجکٹس کے معاہدوں پر دستخط بھی کریں گے۔

TOPPOPULARRECENT