Wednesday , January 24 2018
Home / اضلاع کی خبریں / شادنگر میں مسلمانوں کو بادشاہ گر کا موقف

شادنگر میں مسلمانوں کو بادشاہ گر کا موقف

شادنگر /15 اپریل (منصور علی خان کی رپورٹ ) ریاست میں منعقدہ عام انتخابات میں ضلع محبوب نگر کے شادنگر اسمبلی حلقہ پر ہر ایک کی نظر ٹکی ہوئی ہے ۔ شادنگر اسمبلی حلقہ شہر حیدرآباد سے قریب تر ہونے اور راجیو گاندھی انٹرنیشنل ایرپورٹ سے قریب ہونے کی وجہ سے خصوصی اہمیت کا حلقہ تصور کیا جاتا ہے ۔ انتخابات کے مرحلہ کے آغاز سے لیکر 2014 کے عام انتخ

شادنگر /15 اپریل (منصور علی خان کی رپورٹ ) ریاست میں منعقدہ عام انتخابات میں ضلع محبوب نگر کے شادنگر اسمبلی حلقہ پر ہر ایک کی نظر ٹکی ہوئی ہے ۔ شادنگر اسمبلی حلقہ شہر حیدرآباد سے قریب تر ہونے اور راجیو گاندھی انٹرنیشنل ایرپورٹ سے قریب ہونے کی وجہ سے خصوصی اہمیت کا حلقہ تصور کیا جاتا ہے ۔ انتخابات کے مرحلہ کے آغاز سے لیکر 2014 کے عام انتخابات تک شادنگر اسمبلی حلقہ پر زیادہ تر کانگریس پارٹی کا ہی قبضہ دیا ہے ۔ اس مرتبہ بھی کانگریس پارٹی شادنگر اسمبلیحلقہ کو اپنے قبضہ میں رکھنے کیلئے ایڑی چوٹی کا زور لگانے میں معروف ہوگئی ہے ۔ شادنگر اسمبلی حلقہ میں مسلمانوں کا موقوف فی الحال بادشاہ گر بنا ہوا ہے ۔ حلقہ اسمبلی شادنگر سے فی الحال انتخابی میدان میں 14 امیدوار مقابلہ میں موجود ہیں ۔ انتخابات کی تگاریخ کو مدنظر رکھتے ہوئے مختلف سیاسی جماعتوں سے وابستہ قائدین و کارکن ووٹرس کو اپنی جانب راغب ک رنے میں مصروف ہوگئے ہیں ۔ انتخابی میدان میں موجود قائدین مختلف انداز میں انتخابی مہم چلا رہے ہیں ۔ ووٹرس کو اپنی جانب راغب کرنے کیلئے پارٹیوں کی جانب سے جاری کردہ انتخابی منشور کو بھی عوام کے سامنے پیش کریت ہوئے ووٹرس کے ذہنوں کو تبدیل کرنے کی بھرپور کوشش کر رہے ہیں ۔ چلچلاتی شدت کی دھوپ کے ساتھ ساتھ انتخابی مہم میں بھی شدت پیدا ہو رہی ہے ۔ ہر ایک امیدوار اپنی اپنی کامیابی کیلئے کوشش میں مصروف ہوگئے ہیں ۔ شادنگر اسمبلیحلقہ سے مقابلہ کرنے والے امیدوار کوئی بھی موقع ہاتھ سے گوانے نہیں دے رہا ہے ۔ ہر ایک امیدوار اپنی جدوجہد کو پروان چڑھانے کیلئے پارٹی اعلی قائدین کو اپنے حلقہ کا دورہ کرتے ہوئے انتخابی مہم میں شرکت کرنے کیلئے دعوت دے رہے ہیں ۔ نیشنل پارٹیاں اور علاقائی پارٹیاں انتخابی مہم کو مزید طاقت ور بنانے کیلئے گاڑیوں کا بھی استعمال کرتے ہوئے گاڑیوں پر اپنے اپنے فلکسی کے علاوہ میک سیٹوں کے ذریعہ امیدوار اور پارٹی کے حق میں گیتوں کو پیش کر رہے ہیں ۔ انتخابی مہم کے دوران عوام ووٹرس تک پہونچنے والے امیدوار کو عوامی درپیش مسائل کا سامنا کرنا پڑھ رہا ہے ۔ اس موقع پر امیدوار عوام سے بلند بانگ دعوے کرتے ہوئے مسائل کی یکسوئی کا تیقن بھی دے رہے ہیں ۔ عام انتخابات کے عمل کے آغاز کے ساتھ ہی جگہ جگہ سیاسی گفتگو ایک دوسرے کے درمیان موضوع بنی ہوئی ہے ۔ کانگریس پارٹی قائدین اس کوشش میں مصروف ہیں کہ متحدہ آندھراپردیش میں شادنگر اسمبلی حلقہ کانگریس پارٹی کے قرضہ میں تھا اس طرح جدید تشکیل شدہ تلنگانہ ریاست میں شادنگر اسمبلی حلقہ کانگریس پارٹی کے ہی قبضہ میں برقرار رہنے کی کوشش میں ہیں ۔ کانگریس پارٹی امیدوار اور قائدین کو شادنگر اسمبلی حلقہ سے کانگریس پارٹی امیدوار سابقہ رکن اسمبلی شادنگر چولہ پلی پرتاپ ریڈی تلنگانہ راشٹریہ سمیتی پارٹی امیدوار وائی انجیا یادو ، تلگودیشم پارٹی اور بی جے پی میں اتحاد کی وجہ سے شادنگر اسمبلی حلقہ کی نشست بھارتیہ جنتا پارٹی کیلئے چھوڑ دیا گیا ۔ بی جے پی پارٹی امیدوار سری وردھن ریڈی انتخابی میدان میں ہیں ان کے علاوہ وائی ایس آر سی پی پارٹی سے پی سدکھاکر ریڈی عام آدمی پارٹی امیدوار ایس دھنکا کے علاوہ 9 آزاد امیدوار انتخابی میدان میں موجود ہیں ۔ آزاد امیدواروں میں دو مسلم امیدوار محمد شفیع الدین اور شیخ نوراللہ خان شامل ہیں ۔ ووٹرس کس کے حق میں اپنے ووٹ کا استعمال کریں گے یہ تو آنے والا وقت ہی بتائے گا ۔

TOPPOPULARRECENT