Monday , December 18 2017
Home / اضلاع کی خبریں / شادنگر میں نومولود لڑکی علاج کے دوران فوت

شادنگر میں نومولود لڑکی علاج کے دوران فوت

افراد خاندان کی ہنگامہ آرائی ‘ حملہ میں ڈاکٹر زخمی

شادنگر ۔ 24 ستمبر ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) مستقر شادنگر میں واقع انمول چلڈرن ہاسپٹل میں زیر علاج 4 دن کی کمسن و معصوم لڑکی علاج کے دوران فوت ہوگئی ۔ کمسن و معصوم 4 دن کی لڑکی فوت ہونے کی وجہ سے لڑکی کے افراد خاندان نے سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے انمول ہاسپٹل (چلڈرن) میں ہنگامہ کرتے ہوئے ہاسپٹل کے فرنچر کو توڑ دیا اور انمول چلڈرن ہاسپٹل کے ڈاکٹر ایم پریم کمار پر حملہ کرتے ہوئے برہم افراد خاندان نے ڈاکٹر کو زخمی کر دیا ۔ فوت لڑکی کے والد نرسمہا اور والدہ رادیکا نے بتایا کہ لڑکی تولد کے بعد کافی صحت مند تھی ۔ معمولی طبیعت خراب ہونے کی وجہ سے انمول چلڈرن ہاسپٹل میں علاج کی غرض سے لایا گیا ۔ ڈاکٹر ایم پریم کمار کے مشورہ پر ہاسپٹل میں شریک کروایا گیا ۔ دو دن مذکورہ ہاسپٹل میں ڈاکٹر کی نگرانی میں علاج کروایا گیا اور آج صبح اچانک کمسن و معصوم لڑکی کی طبیعت کافی خراب ہوچکی ہے اور فوری حیدرآباد منتقل کرنے کی ہدایت دی ۔ جبکہ صبح کی اولین ساعتوں تک لڑکی کی طبیعت کافی بہتر تھی ۔ شادنگر کے انمول ہاسپٹل سے حیدرآباد کے لئے نکلنے کے دوران ہی لڑکی فوت ہوگئی ۔ لڑکی کے افراد خاندان کا الزام ہے کہ لڑکی کی موت ڈاکٹر کی لاپرواہی اور عدم توجہ کی وجہ سے ہی ہوئی ہے ۔ اطلاع پا کر شاد نگر ٹاؤن سرکل انسپکٹر رمیش بابو ‘ ایس آئی وجے کمار پولیس جمعیت کے ساتھ ہاسپٹل پہنچ گئے ۔ اور حالات کو قابو میں کیا ۔ فوت لڑکی کے افراد خاندان کا اصرار ہے کہ انمول ہاسپٹل کو ہمیشہ کے لئے مہر بند کیا جائے اور ڈاکٹر کے خلاف سخت قانونی کارروائی کی جائے۔ شادنگر پولیس نے ڈاکٹر ایم پریم کمار کو حراست میں لے لیا ۔ شادنگر پولیس کیس درج رجسٹر کر کے تحقیقات کا آغاز کر دیا ۔

 

 

 

TOPPOPULARRECENT