Sunday , June 24 2018
Home / شہر کی خبریں / شادیوں میں اسراف حرام ، تقریب نکاح میں کھانے کا مطالبہ ناجائز

شادیوں میں اسراف حرام ، تقریب نکاح میں کھانے کا مطالبہ ناجائز

ایک کھانا ایک میٹھا مہم کو عام کرنے کی ضرورت ، علماء و مشائخین کا اجلاس

ایک کھانا ایک میٹھا مہم کو عام کرنے کی ضرورت ، علماء و مشائخین کا اجلاس
حیدرآباد ۔ 16 ۔ جون : ( راست ) : شادیوں میں اسراف حرام ہے ۔ لڑکے والوں کی جانب سے تقریب نکاح میں کھانے کا مطالبہ ناجائز ہے ۔ علماء و مشائخین ، ملی و دینی جماعتوں کے ذمہ دار شان و شوکت کے مظاہروں والی شادیوں کا بائیکاٹ کریں ۔ اللہ نے جس کو حلال قرار دیا وہ حلال ہے اور جس کو حرام کیا وہ حرام ہے ۔ شادیوں میں ایک کھانا ایک میٹھا مہم کے ضمن میں تحریک مسلم شبان اور مہم کمیٹی کے زیر اہتمام مفتیان کرام کے اجلاس میں اسراف کو حرام قرار دیا گیا اور لڑکے والوں کی جانب سے تقریب نکاح میں کھانے کا مطالبہ شادی میں جہیز کا مطالبہ کرنے کو مفتیان نے ناجائز قرار دیا ۔ مفتی مولانا صادق محی الدین ( سابق نائب مفتی جامعہ نظامیہ ) ، مفتی ڈاکٹر مستان علی ( ناظم جامعتہ المومنات ) ، مولانا آصف عمری اہلحدیث ، مفتی محمد ابرار جامعہ دارالھدیٰ ، مفتی محمد فتح عادل ، مفتی منظور عثمانی ، مولانا حافظ شیخ حسین ( نظامیہ ) ، مولانا سید افتخار الدین قادری پر مشتمل ایک پیانل نے سوالات پر شرعی نقطہ نظر پیش کیا ۔ جناب محمد مشتاق ملک صدر تحریک مسلم شبان نے ابتداء میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایک کھانا ایک میٹھا مہم کے ضمن میں مفتیان کرام کا یہ اجلاس رکھا گیا ہے ۔ اس مہم کا مقصد ملت اسلامیہ کے بے شمار افراد کو سود کی لعنت اور غیر ضروری بھاری قرض لینے سے بچا کر ملت کی معیشت کے ساتھ جہیز اور کھانے کے عنوان پر بیٹھی ہزاروں لڑکیوں کی شادی میں آسانی پیدا کرنا ہے ۔ اجلاس کی نگرانی مولانا سید حامد حسین شطاری سنی علماء بورڈ نے کی ۔ سنی ، تبلیغی ، اہلحدیث ، دیوبندی ، علماء اور معززین کی کثیر تعداد اجلاس میں شرکت کی ۔ اجلاس کا احساس تھا کہ عقائد و مسلکی اختلافات سے بالا تر ہو کر نکاح آسان بنانے کی اس تحریک کو مضبوط کرنا چاہئے ۔ نکاح کرنے کے لیے کئی مسائل پیدا کردئیے گئے ہیں ۔ نکاح اسلام میں بہت آسان ہے ، اس کو مشکل بنادیا گیا ہے ۔ جس کی وجہ سے مسلم سماج میں کئی فتنے پیدا ہورہے ہیں ۔ غریب اور متوسط افراد فینانسرس کے چنگل میں پھنس رہے ہیں ۔ گھر رہن رکھ دئیے جارہے ہیں ۔ نکاح یعنی لڑکی کی شادی کے نام پر ماں باپ پریشان ہیں ۔ قرضوں میں مبتلا ہیں ۔ علمائے کرام ذی شعور اصحاب ، مشائخین ایسی شادیوں کا مکمل بائیکاٹ کریں جس میں اسراف جیسا حرام عمل ہورہا ہے ۔ ناچ گانا حرم ہے ، جہیز کا مطالبہ ناجائز ہے ۔ اجلاس میں شادیوں میں سادگی کے مسئلہ پر متحد ہونے پر زور دیا گیا ۔ اجلاس میں جناب محمد رحیم اللہ خاں نیازی سابق صدر اردو اکیڈیمی ، ظہیر الدین ثمر ، جناب محمد مسکین احمد ، جناب ایم اے غفار نائب صدر ، جناب سید ارشد حسین عام آدمی پارٹی ، مولانا راشد قادری ، جناب سید عارف قادری ، جناب پرویز صدر ، جناب شوکت خاں این آر آئی ، جناب عثمان الہاجری صدر وقف پروٹیکشن سیل ، جناب مبشر خرم ( جرنلسٹ ) ، جناب شیخ محمد صوفی ، جناب وسیم الہامی ، محمد نظام الدین مولف اسلامی معاشرہ میں شادی بیاہ کے علاوہ مدارس دینیہ کے طلباء ، علماء و معززین نے شرکت کی ۔ آخر میں جناب محمد رحیم اللہ خاں نیازی نے شکریہ ادا کیا ۔۔

TOPPOPULARRECENT