Saturday , November 25 2017
Home / شہر کی خبریں / شادیوں میں جہیز کی لعنت پر روک لگانا وقت کی اہم ضرورت

شادیوں میں جہیز کی لعنت پر روک لگانا وقت کی اہم ضرورت

سیاست و ایم ڈی ایف رشتوں کا دو بہ دو پروگرام، جناب عظمت اللہ خان کا خطاب
حیدرآباد 5 جون (دکن نیوز) سیاست اور میناریٹی ڈیولپمنٹ فورم کے تعاون و اشتراک سے آج رائل ریجنسی گارڈن روبرو پٹرول پمپ ، آصف نگر میں62  واں دو بہ دو ملاقات پروگرام کا اہتمام کیا گیا۔ والدین اور سرپرستوں نے (لڑکوں اور لڑکیوں) کی شادی کے لئے یہ نایاب پروگرام دونوں شہروں ہی نہیں بلکہ ریاست تلنگانہ اور بیرون ممالک میں اپنی پہچان بنا چکا ہے۔ جیسا کہ اس بات کا اعلان بارہا اخبارات کے ذریعہ کیا جاتا رہا کہ گزشتہ دو بہ دو پروگرامس کی طرح اس سال پروگرام میں بھی بی ای، بی ٹیک، ایم ای، ایم ٹیک، ایم ایس، ایم اے، ایم ایس سی، ایم کام، ایم بی اے، ایم سی اے، ایم بی اے، میڈیسن کے لئے علیحدہ علیحدہ کاؤنٹرس قائم کئے گئے جس میں اب تک ہوئے دو بہ دو پروگرامس میں جن والدین نے رجسٹریشن لڑکے اور لڑکیوں کے کروائے ان کے بائیو ڈاٹاس اور فوٹوز ملاحظہ کے لئے رکھے گئے۔ دو بہ دو ملاقات پروگرام کا آغاز 10 بجے دن سے ہوا۔ 4 بجے شام تک والدین نے بڑے اطمینان و سکون کے ساتھ کاؤنٹرس پر پہنچ کر رشتوں کی تلاش میں منہمک نظر آئے۔ اس کے علاوہ کمپیوٹر سیکشن پر لڑکوں کے بائیو ڈاٹاس اور فوٹوز کا والدین نے کمپیوٹر کی مدد سے ملاحظہ کیا۔ اس طرح آج کے اس پروگرام میں 30 رشتوں کی مشاورت کی گئی اور یہ رشتے طے ہونے کا امکان ہے۔ اس طرح والدین نے لڑکوں کے 125 اور لڑکیوں کے 65 بائیو ڈاٹاس اور فوٹوز رجسٹریشن کروائے جس میں سے 50 والدین کی کونسلنگ کی گئی اور 25 تا 30 رشتے طے ہونے کے امکانات بھی ہیں۔ جناب ظہیرالدین علی خاں منیجنگ ایڈیٹر روزنامہ سیاست کی سرپرستی میں آج کا پروگرام کامیابی و کامرانی سے ہمکنار ہوا اور اختتام کے بعد والدین نے اُنھیں مبارکباد دی۔ جیسے ہی پروگرام کا وقت ختم ہونے کے قریب تھا، کاؤنٹرس پر بائیو ڈاٹاس اور فوٹوز والدین اپنے ہاتھوں میں لئے ہوئے ایک دوسرے سے مشاورت کرتے دیکھے گئے۔ جناب ایم قدیر کارگذار صدر ایم ڈی ایف نے مہمانان اور شرکاء کا خیرمقدم کیا اور کہاکہ سیاست اور ایم ڈی ایف کے ذریعہ جتنے سماجی و فلاحی کام انجام دیئے جارہے ہیں ان تمام میں جناب زاہد علی خان ایڈیٹر سیاست، جناب ظہیرالدین علی خاں منیجنگ ایڈیٹر سیاست اور جناب عامر علی خان نیوز ایڈیٹر سیاست کی سرپرستی و نگرانی کارفرما ہے۔ انھوں نے شادی خانہ کے مالکین سعید بن محمد القعیطی اور فیصل بن علی القعیطی اور محمد امجد حسین منیجر کا شکریہ ادا کیا۔ اس کے علاوہ اُنھوں نے محکمہ پولیس کے تعاون کا بھی شکریہ ادا کیا۔ مہمان خصوصی کی حیثیت سے جناب عظمت اللہ خان ایڈیشنل ایس پی (موظف) نے شرکت کی۔ جناب عظمت اللہ خان نے کہاکہ مسلمانوں میں آج شادیوں میں جہیز و لین دین کی مانگ کی وباء بڑھتی اور پھیلتی جارہی ہے اس پر روک لگانا وقت کی ضرورت ہے۔ سیاست اور میناریٹیز ڈیولپمنٹ فورم جیسے ادارے وجود میں آئیں تو اس وبا پر روک لگانا آسان ہوجائے گا۔ انھوں نے قرآن کی آیت کا حوالہ دیا اور کہاکہ قرآن نے کہاکہ ’’اللہ نے اُس قوم کی حالت نہیں بدلی جس کو خود اپنی حالت کے بدلنے کا خیال پیدا نہ ہو‘‘۔ اس لئے وقت کا تقاضہ ہے کہ خود انسان اپنے آپ کو بدلے۔ انھوں نے کہاکہ آج جڑواں شہر میں ہی نہیں بلکہ ریاست بھر میں پیامات کے اداروں نے بڑے آن و شان کے ساتھ رشتوں کے لگانے میں بے دریغ پیسے بٹور رہے ہیں  اگر سیاست و ایم ڈی ایف جیسے ادارے مارکٹ میں آجائیں تو وہ اس میدان میں تاریخ کو رقم کرسکتے ہیں۔ انھوں نے رشتوں کے سلسلہ میں جو دھاندلیاں ہورہی ہیں اُس پر بھی روشنی ڈالی اور یہ شعر پڑھا کہ :
یا رب دل مسلم کو وہ زندہ تمنا دے
جو روح کو تڑپا دے قلب کو گرما دے
اس پر ہال تالیوں سے گونج اُٹھا۔ جناب عثمان الہاجری نے قرآن کی آیت کا حوالہ دیا اور کہاکہ نیکی اور تقویٰ کے کام میں تعاون کیا جائے جس سے رب کی خوشنودی حاصل ہوگی اور کہاکہ جناب زاہد علی خان اور جناب ظہیرالدین علی خان اور جناب عامر علی خان کی نگرانی میں مختلف فلاحی کام ملت اسلامیہ کے انجام دیئے جارہے ہیں جس سے ملت فائدہ حاصل کررہی ہے۔ رشتوں کا یہ دو بہ دو ملاقات پروگرام ، مسلم نوجوانوں کو پولیس میں بھرتی، تعلیم کے ضمن میں رہبری و رہنمائی، روزگار سے منسلک کرنے کے لئے کونسلنگ اور خود کالجس میں داخلوں کے لئے جو کونسلنگ کا کام اور دیگر اُمور انجام دیئے جارہے ہیں وہ بڑے ہی خوش آئند ہیں۔ دو بہ دو پروگرام میں انجینئرنگ اور گریجویٹس کے لڑکوں کو اسکرین پر فوٹوز اور بائیو ڈاٹا کی تفصیل میر انورالدین، زاہد فاروقی، محترمہ لطیف النساء اور محمد فریدالدین، سیدہ محمدی، آمنہ فاطمہ نے دکھلائے جس پر والدین نے ایک دوسرے سے مشاورت کی۔ جبکہ میڈیسن میں ڈاکٹر سیادت علی، عابدہ بیگم، فاطمہ اور صالحہ فاطمہ نے والدین کی رہبری کی۔ پوسٹ گریجویٹ میں سید الیاس باشاہ، سید اصغر حسین، برکت علی اور سارہ فاطمہ نے والدین کی رہبری و رہنمائی کی۔ گریجویٹس سید ناظم الدین، صالح بن عبداللہ باحاذق، شہناز فاطمہ اور رئیس النساء نے رہنمائی کی۔ انٹر ، ایس ایس سی حافظ میں ڈاکٹر ناظم علی، محترمہ ثانیہ، ثناء بیگم، ریحانہ نواز نے تعاون کیا۔ عقدثانی کے کاؤنٹر پر ایم اے واحد، زبیدہ بیگم، سیما خاتون نے رہنمائی کی اور رجسٹریشن کروانے میں والدین کی مدد کی۔ محترمہ خدیجہ سلطانہ، احمد صدیقی مکیش اور محمد شاہد حسین، اے اے کے امین نے سوپر وائیزر اسٹاف کی حیثیت سے فرائض انجام دیئے۔ ایم اے قدیر کارگذار صدر کی نگرانی میں کاؤنٹرس پر موجود والدین اور سرپرستوں نے ایک دوسرے سے تبادلہ خیال کرتے ہوئے دیکھے گئے۔ آج کے اس دو بہ دو ملاقات پروگرام میں شہر اور مضافاتی علاقوں اور اضلاع سے 5000 سے زائد والدین اور سرپرستوں نے شرکت کی۔ قاری الیاس باشاہ کی قرأت اور احمد صدیقی مکیش کی نعت شریف سے پروگرام کا آغاز ہوا۔

TOPPOPULARRECENT