Wednesday , December 19 2018

شادیوں میں فضول خرچی سے اجتناب کے لیے جناب زاہد علی خاں کی تحریک کا مثبت اثر

سائنسداں احمد حسین اور انکے خاندان کی فراخدلی ، تین غریب لڑکیوں کی اجتماعی شادیاں

سائنسداں احمد حسین اور انکے خاندان کی فراخدلی ، تین غریب لڑکیوں کی اجتماعی شادیاں
حیدرآباد۔11اگست(سیاست نیوز) نفسا نفسی کے اس دور میںجہاں بھائی کے ہاتھوں بھائی کا قتل ہورہا ہے۔ چھوٹی چھوٹی ضررتوں کی تکمیل کے لئے انسانیت سوز حرکتیں کی جارہی ہیں او رمہنگائی کے اس پرآشوب دور میں نکاح جیسی عظیم سنت کو مشکل اور زنا جیسے ناقابلِ معافی گناہ کو آسان بنادیا گیا ہے اور ان تمام برائیوں کا اثر غریب اور متوسط طبقے کے مسلمانوں پر پڑرہا ہے۔ معاشی مصائب کی مار اور مہنگائی معاشی طور پر کمزور مسلم خاندان کی لڑکیوں کی شادی میں رکاوٹ بن رہی ہے۔ ان حالات میں مدیر اعلی روزنامہ سیاست جناب زاہد علی خان نے شادیوں میں بیجا اصراف اور فضول خرچی سے اجتناب کی جس تحریک کا آغاز عمل میں لایا ہے اُس کا اثر اصلاح معاشرہ کے لئے تڑپتا دل رکھنے والے مسلمانوں میںواضح طور پر دکھائی دے رہا ہے۔ اتوار کے دن دوپہر میں سائنس داںاحمد حسین اور ان کے افراد خاندان کے تعاون سے تین غریب لڑکے اور لڑکیوں کی اجتماع شادی مسجد محمدیہ بدویل میںانجام دی گئی جن میںسے ایک لڑکی کے والد اور والدہ دونوں انتقال کرگئے لہذا حمد حسین نے مذکورہ دلہن کے سرپرست بن کر والدین کے فرائض انجام دئے۔ انہوں نے اس موقع پر بتایا کہ وہ اور ان کے افراد خاندان نے ملکر خاندان میںہونے والی شادیوںمیں سادگی اور عام دنوں میں ہونے والے فضول اخراجات سے بچتے ہوئے جمع کی گئی رقم سے یہ شادیاں انجام دی ہیں۔ انہوں نے مزیدکہاکہ دولہا‘ دلہن کے کپڑوں سے لیکر روز مرہ استعمال ہونے والے اشیاء اور زندگی شروع کرنے کے لیے پانچ ہزار روپئے فی جوڑے کو ادا کئے گئے۔انہوں نے مزید بتایا کہ میںاور ہمارے افراد خاندان غریب اور مستحق لڑکیوں کی شادی کے لئے حیدرآباد ویلفیر سوسائٹی سے رجوع ہوئے جہاں پر ہمیںمذکورہ تین دولہا اوردلہنوں کی نشاندہی کروائی گئی جو معاشی طور پر نہایت ہی پسماندہ ہیں۔منتظمین دعوت نے دولہا ‘ دلہن کے رشتہ داروں اور عزیز اوقارب کے لئے ظہرانہ کا بھی انتظام کیا ۔نہایت ہی خوش اصلوبی کے ساتھ منتظمین نے سنت نبیؐ کی پیروی کرتے ہوئے تین جوڑوں کو رشتہ ازدواج میں باندھنے کاکام کیا۔ خطبہ نکاح کے موقع پر حاضرین محفل سے مخاطب ہوتے ہوئے خطیب مسجد محمدیہ بدویل نے بھی اصلاح معاشرے کے لئے اجتماعی شادیوں کے نظم کو عام کرنے کی ضرورت پر زوردیا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT