Thursday , June 21 2018
Home / جرائم و حادثات / شادی خانہ کے گوشہ خواتین میں برقعہ میں اجنبی شخص

شادی خانہ کے گوشہ خواتین میں برقعہ میں اجنبی شخص

بچوں کے اغواء اور زیورات کے سرقہ میں سرگرم ٹولی کا انکشاف ، فنکشن ہال میں افراتفری

بچوں کے اغواء اور زیورات کے سرقہ میں سرگرم ٹولی کا انکشاف ، فنکشن ہال میں افراتفری
حیدرآباد /17 جون ( سیاست نیوز ) شہر کے ایک شادی خانہ میں کل رات اس وقت تقریب میں بے چینی و سنسنی پیدا ہوگئی جب ایک اجنبی شخص کو گوشہ خواتین میں پکڑ لیا گیا ۔ جو برقعہ پہنے ہوئے مشتبہ حالت میں گشت کر رہا تھا ۔ بتایا جاتا ہے کہ آصف نگر پولیس حدود میں واقع ایک فنکشن میں تقریب جاری تھی کہ اچانک خواتین کے سیکشن میں بے چینی پیدا ہوگئی ۔ فوری طور پر چوکسی اختیار کرنے والے رشتہ داروں نے اس برقعہ پوش کا نقاب نکالا جو خاتون نہیں خاتون کے بھیس میں مرد تھا جو نہ صرف برقعہ بلکہ لباس بھی لڑکیوں کا پہنے ہوئے تھا ۔ جب اس کا انکشاف ہوا تو فنکشن ہال میں افراتفری پھیل گئی اور اس دوران یہ اجنبی فرار ہونے میں کامیاب ہوگیا ۔ تاہم اس ہنگامہ اور سنسنی کی پولیس کو کوئی اطلاع نہیں ہے ۔ تقریب میں شریک افراد اور مقامی عوام کا کہنا ہے کہ چند ٹولیاں سرگرم ہیں جو بچوں کا اغواء کرنے کیلئے اپنے حلئے بدل کر گھوم رہے ہیں اور شادی بیاہ تقاریب کو نشانہ بنارہے ہیں ۔ عوام کا اس اجنبی پر الزام ہے کہ وہ بچوں کو اغواء کرنے کی غرض سے آیا تھا ۔ چونکہ شادی بیاہ تقاریب میں ہر کوئی مصروف ہوتا ہے ایسی صورت میں ان افراد کو اپنا کام کرنے اور ناپاک عزائم کی انجام دہی میں آسانی ہوتی ہے ۔ بچوں کے اغواء کے علاوہ قیمتی سامان اور زیورات کا سرقہ کرنے کیلئے بھی ایسی ٹولیاں سرگرم ہیں تاہم اس خصوص میں آصف نگر پولیس سے رابطہ پیدا کرنے پر پولیس نے اس واقعہ سے خود کو لاعلم قرار دیا اور کہا کہ پولیس کو کسی بھی قسم کی کوئی شکایت وصول نہیں ہوئی ۔ جبکہ اکثر شادی خانوں کے اطراف رات دیر گئے پولیس کے جوان اور گاڑیاں نظر آتی رہتی ہیں کبھی بیانڈ باجا بند کروانے تو کبھی دیر رات گئے تقریب کے انعقاد پر اعتراض کرتے ہوئے تاہم اس واقعہ کا پولیس کو علم نہ ہونا شہریوں میں تشویش کا باعث بنا ہوا ہے ۔ مجرم پیشہ افراد اور جرائم کی روک تھام پر اور خاطیوں کی گرفتاری میں مہارت رکھنے والی پولیس کو اس بات کا علم نہ ہونا تعجب کا باعث اور پولیس کی چوکسی پر سوالیہ نشان بن گیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT