Tuesday , June 19 2018
Home / جرائم و حادثات / شادی سے عین قبل غیرمعمولی جہیز کے مطالبہ کا شاخسانہ

شادی سے عین قبل غیرمعمولی جہیز کے مطالبہ کا شاخسانہ

دلہن والوں کی دلیرانہ کارروائی سے دلہا اور والد نوشہ جیل منتقل

دلہن والوں کی دلیرانہ کارروائی سے دلہا اور والد نوشہ جیل منتقل
حیدرآباد ۔ 21 جون (سیاست نیوز) مسلم سماج میں جہیز و ہراسانی کے واقعات دن بہ دن بڑھتے جارہے ہیں۔ شادی کے بعد لڑکی کو لالچی سسرالی رشتہ دارو اور شوہر پریشان کرنے کے اکثر واقعات منظرعام پر آتے ہیں لیکن پرانے شہر میں ایک سنسنی خیز واقعہ پیش آیا جہاں زائد جہیز کے مطالبہ پر لڑکی والوں نے ہمت کا کام کرتے ہوئے رشتہ ہی ترک کرلیا اور پولیس میں شکایت کردی۔ پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے لالچی دولہے اور اس کے والد کو جیل منتقل کردیا۔ یہ سنسنی خیز واقعہ پرانے شہر کے علاقہ فلک نما میں پیش آیا۔ بتایا جاتا ہیکہ جہاں نما علاقہ کے ساکن عبدالعزیز خاں نے پولیس میں کل شکایت کی تھی کہ ان کی بہن کی شادی جس لڑکے سے طئے ہوئی ہے وہ شادی سے عین قبل مزید زائد جہیز کا مطالبہ کررہا ہے بصورت دیگر وہ شادی سے انکار کررہا ہے۔ لڑکی والوں نے شادی سے قبل طئے شادی شدہ بات چیت میں تمام شرائط مان لئے تھے لیکن شادی سے ایک دن قبل دھمکی سے لڑکی والے پریشان ہوگئے اور اس لڑکے کی لالچی نیت اور فطرت کو دیکھ کر خوفزدہ ہوگئے اور انہوں نے مسئلہ کو پولیس سے رجوع کردیا۔ لڑکی کے خاندانی ذرائع کے مطابق 25 سالہ محمد کلیم الدین ولد محمد کریم الدین ساکن ٹولی چوکی جو پیشہ سے اکاونٹنٹ ہے، سعودی عربیہ میں ملازمت کرتا تھا۔ اس سے جہاں نما کی لڑکی کی شادی طئے ہوئی تھی اور شادی 21 جون انجن باؤلی میں واقع ایک فنکشن ہال میں منعقد ہونے والی تھی۔ لڑکی کے خاندانی ذرائع کے مطابق کلیم الدین نے دو دن قبل جبکہ لڑکی کے مکان میں شادی کی تمام تیاریاں زور و شور سے جاری تھی اور مہمانوں کی آمدورفت شروع ہوچکی اور ہر طرف خوشیوں کا ماحول تھا ان کی خوشیوں میں خلل ڈال دی اور اپنے زائد جہیز کے مطالبہ سے سب کو پریشان کردیا۔ کلیم الدین پر الزام ہیکہ اس نے مبینہ طور پر 2 سو گز کا پلاٹ ایک سوئفٹ کار 10 تولہ سونے کا زائد مطالبہ کیا تھا اور اس بات کی دھمکی دی تھی کہ اگر نکاح سے قبل یہ مطالبات پورے نہیں کئے جاتے ہیں تو شادی نہیں ہوگی جس پر لڑکی والے پریشان ہوگئے۔ تاہم لڑکی والوں نے سونچ سمجھ کر ہمت سے کام لیا اور اپنی لڑکی کیلئے اس رشتہ کو موزوں نہ مانتے ہوئے رشتہ توڑنے کا درست اور صحیح وقت فیصلہ کرلیا اور ان لالچی باپ بیٹوں کے خلاف پولیس سے شکایت کردی۔ انسپکٹر فلک نما مسٹر محمد شاکر حسین سے بات کرنے پر انہوں نے بتایا کہ شادی کے دلہے کلیم الدین اور ان کے والد کریم الدین کو جیل منتقل کردیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ لڑکی کے بھائی عبدالعزیز خاں کی شکایت پر پولیس نے کارروائی انجام دی۔ انہوں نے لڑکی والوں کی ستائش کی اور کہا کہ عین شادی سے قبل اس طرح کا دلیرانہ اقدام قابل ستائش ہے اور اس سے سماج میں ایک بہترین پیغام پہنچے گا۔ انہوں نے لڑکی والوں کی کونسلنگ کی اور لڑکی کو بھی ہمت دلائی اور کہا کہ اگر ایک مرتبہ اس لالچی کی بات مان لی جاتی تو عمر بھر لڑکی کی زندگی عذاب بن جاتی۔ جہیز کے خلاف جو سماج کا ناسور بن گیا ہے۔ لڑکی والوں کا اقدام قابل ستائش ہے اور جہیز کی اس لعنت کے خاتمہ کیلئے اس طرح ہمت سے کام لینا چاہئے۔

TOPPOPULARRECENT