Thursday , November 23 2017
Home / جرائم و حادثات / شاطر دھوکہ باز گرفتار ، فرضی دستاویزات پر قرض کے حصول کا شاخسانہ

شاطر دھوکہ باز گرفتار ، فرضی دستاویزات پر قرض کے حصول کا شاخسانہ

فرضی تنیشا انفرا پراجکٹ کے نام قرض کی عدم ادائیگی ، آندھرا بنک کی شکایت پر پولیس کارروائی
حیدرآباد ۔ /13 جولائی (سیاست نیوز) سنٹرل کرائم اسٹیشن (سی سی ایس) پولیس نے تین شاطر دھوکہ بازوں کو گرفتار کرلیا جو فرضی دستاویزات کی بنیاد پر آندھرا بینک سے کروڑہا روپئے کا قرض حاصل کیا ۔ ڈپٹی کمشنر پولیس ڈیٹکٹیو ڈپارٹمنٹ مسٹر اویناش موہنتی نے بتایا کہ 26 سالہ پی انجی بابو یادو ساکن سری نگر کالونی ، کے نوین کمار ساکن صنعت نگر اور امباداس سوما متوطن نارائن کھیڑ ضلع میدک دھوکہ دہی کے ذریعہ قرض حاصل کرنے کی غرض سے آندھرا بینک کے عہدیداروں سے رجوع ہوئے اور فرضی دستاویزات کی بنیاد پر ایک کروڑ 39 لاکھ 90 ہزار کا قرض حاصل کیا اور بینک عہدیداروں کے شبہ سے بچنے کیلئے چند ماہ ماہانہ قسط بھی ادا کی ۔ بعد ازاں بقائے جات ادا کرنے سے قاصر رہے ۔ بینک عہدیداروں نے مذکورہ دھوکہ بازوں سے قرض کی ادائیگی کیلئے نوٹس جاری کی لیکن فرضی دستاویزات کی بنیاد پر حاصل کئے گئے قرض کو ادا کرے بغیر دھوکہ باز فرار ہوگئے ۔ بینک عہدیداروں کو فرضی دستاویزات کا پتہ چلنے پر سی سی ایس پولیس سے شکایت درج کروائی جس کے نتیجہ میں مقدمہ درج کرتے ہوئے تحقیقات کا آغاز کیا گیا اور یہ معلوم ہوا کہ دھوکہ بازوں نے تنیشا انفرا پراجکٹس کے فرضی ادارہ کے نام پر کوٹک مہیندرا بینک میں بینک کھاتہ کھولا اور آندھرا بینک سے حاصل کی گئی قرض کی رقم کو جمع کیا اور بعد ازاں اسے حاصل کرلیا ۔ سی سی ایس پولیس نے گرفتار دھوکہ بازوں کو نامپلی کریمنل کورٹ کے بارہویں چیف ایڈیشنل میٹرو پولیٹین مجسٹریٹ کے اجلاس پر پیش کیا اور جیل منتقل کردیا ۔

TOPPOPULARRECENT