Thursday , February 22 2018
Home / دنیا / شام میں فوری کشیدگی میں کمی کی کوششیں ضروری

شام میں فوری کشیدگی میں کمی کی کوششیں ضروری

معتمد عمومی اقوام متحدہ انٹونیو گوٹیرس کی شام کی جنگ کے فریقین سے اپیل
اقوام متحدہ ۔ 11فبروری ( سیاست ڈاٹ کام ) اقوام متحدہ کے معتمد عمومی انٹونیو گوٹیرس نے شام میں فوری کشیدگی میں کمی کی ضرورت پر زور دیا اور کہا کہ جنگ زدہ ملک میں اسرائیل نے دھاوے کئے ہیں جو بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی ہے ۔ گوٹیرس پریشان کن فوجی اضافہ پر گہری نظر رکھے ہوئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ شام میں ملک گیر سطح پر کشیدگی میں خطرناک حد تک اضافہ ہوگیا ہے اور اب یہ کشیدگی سرحد پار بھی پھیل رہی ہے ۔ ان کے ترجمان اسٹیفن ڈچارک نے ایک بیان میںکہا کہ اسرائیل نے اپنی کارروائی کو ایرانی مورچوں پر شام کی سرزمین کے اندر حملہ کرنے کا ادعا کیا ہے ‘ جبکہ شام کے حلیف ایران کے جنگی طیاروں نے اسرائیل پر حملہ کیا تھا اور حادثہ کا شکار ہوگئے تھے ۔ اسرائیلی دھاوے اس کے طیاروں کو حملے سے روکنے کے بعد منظر عام پر آئے ہیں ۔ اسرائیل کا کہنا ہے کہ ایک ایرانی ڈرون طیارہ اس کی فضائی حدود میں داخل ہوگیا تھا ۔ گوٹیرس نے شام میں جنگ کے تمام فریقین سے اپیل کی کہ فوری کشیدگی میں کمی کی جائے ۔ انہوں نے تشدد کے خاتمہ اور صبر و تحمل برتنے کی اپیل بھی کی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ انتہائی سنگین صف آرائی ایران اور اسرائیل کے درمیان ہے ‘شام میں جنگ کا آغاز 2011ء میں ہوا تھا اور حکومت شام امن بحال کرنے کیلئے باغیوں کے زیر قبضہ علاقوں مشرقی غوطہ اور ادلیب میں ان کے خلاف جارحانہ کارروائی جاری رکھے ہوئے ہے ۔ شام کے عوام مصائب کا شکار ہیں ۔ حالانکہ تقریباً سات سال کی خانہ جنگی میں جو تشدد کی انتہا کا دورہ تھا کسی دوسرے ملک نے شام کی سرحد کے اندر جنگ کے فریقین کے خلاف کارروائی نہیں کی تھی ۔

TOPPOPULARRECENT