Friday , November 24 2017
Home / دنیا / شام میں ہلاکت خیز بم حملے ۔ 148 افراد ہلاک

شام میں ہلاکت خیز بم حملے ۔ 148 افراد ہلاک

دہشت گرد گروپ آئی ایس نے ذمہ داری قبول کی ۔ علوی اجتماع کو نشانہ بنانے کا ادعا
بیروت 23 مئی ( سیاست ڈاٹ کام ) شمال مغربی شام میں مختلف مقامات پر ہوئے بم حملوں میں آج تقریبا 148 افراد ہلاک ہوگئے ۔ ان حملوں کی ذمہ داری آئی ایس گروپ نے قبول کرلی ہے ۔ آئی ایس گروپ شام اور عراق میں برسر کار ہے جبکہ عراق میں بغداد کی سکیوریٹی فورسیس نے فلوجہ شہر پر اپنا قبضہ بحال کرنے بڑے پیمانے پر اس گروپ کے خلاف کارروائی کا آغاز کیا ہے ۔ حقوق انسانی کیلئے کام کرنے والے شامی گروپ کے بموجب جبلہ شہر میں ہوئی بمباری میں تقریبا 100 افراد ہلاک جبکہ طرطوس میں ہوئے دھماکوں میں 48 افراد ہلاک ہوگئے ان میں کم از کم آٹھ بچے شامل ہیں۔ گروپ کے سربراہ رامی عبدالرحمن نے کہا کہ دونوں شہروں میں جنگ کے آغاز کے بعد سے یہ بلا شبہ سب سے ہلاکت خیز حملے تھے ۔ آماق نیوز ایجنسی کے ذریعہ آئی ایس گروپ نے ان حملوں کی ذمہ داری قبول کی ہے ۔ اس کا کہنا تھا کہ اس کے کارکنوں نے جبلہ میں ایک علوی اجتماع پر اور طرطوس میں بھی علوی اجتماع پر حملے کئے ہیں۔ علوی برداری سے ہی شام کے صدر بشارالاسد کا تعلق ہے ۔

سات بم جن میں اکثر خودکش حملے تھے یکے بعد دیگرے جبلہ اور طرطوس میں عوامی مقامات پر ہوئے ۔ شام کے سرکاری میڈیا نے بھی ان حملوں کی اطلاع دی تاہم مہلوکین کی تعداد 78 بتائی ۔ جبلہ میں 45 اور طرطوس میں 33 ہلاکتوں کی اطلاع دی گئی ۔ سرکاری ٹیلی ویژن پر ایک بس اسٹیشن کا فوٹیج دکھایا گیا جو طرطوس میں ہوئے ایک دھماکہ میں تباہ ہوگیا ۔ یہاں آگ میں جل کر تباہ منی بسیں دکھائی گئیں اور کئی بسوں کو اس وقت بھی آگ کی لپیٹ میں دکھایا گیا ۔ یہ دونوں شہر جبلہ اور طرطوس صدر بشارالاسد حکومت کے طاقتور گڑھ ہیں اور ان کے خاندان کا تعلق قراحد گاؤں سے ہے جو جبلہ سے صرف 25 کیلومیٹر دور واقع ہے ۔ یہ شہر ملک شام میں جاری جنگ سے نسبتاً کم متاثر رہے ہیں جس میں اب تک تقریباً 2,70,000 افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔ مقامی افراد نے ان حملوں پر حیرت و صدمہ کا اظہار کیا ہے ۔ ان کا کہنا تھا کہ وہ سمجھ رہے تھے کہ جنگ ختم ہوچکی ہے لیکن ان حملوں سے ایسا لگتا ہے کہ جنگ کا اصل مرحلہ یہی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT