Wednesday , December 13 2017
Home / Top Stories / شام کی صورتحال پر ٹرمپ اور پوٹن کی فون پر بات چیت

شام کی صورتحال پر ٹرمپ اور پوٹن کی فون پر بات چیت

واشنگٹن  ۔ 3 مئی ۔ ( سیاست ڈاٹ کام)امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے اپنے روسی ہم منصب ولادیمیر پوٹن کے ساتھ شام میں جاری جنگ کے خاتمہ کے موضوع پر ٹیلی فون پر تفصیلی بات چیت کی اور ساتھ ہی ساتھ شمالی کوریا میں اس وقت جو خطرناک حالات پائے جاتے ہیں اس موضوع پر بھی دونوں قائدین سے تبادلہ خیال کیا ۔ دونوں قائدین کی ٹیلی فون پر ہوئی بات چیت کے بعد وائیٹ ہاؤس سے جاری ایک بیان میں یہ بات کہی گئی ۔ اپنی بات چیت کے دوران دونوں قائدین خوشگوار موڈ میں تھے جہاں انھوں نے مشرق وسطیٰ سے دہشت گردی کے مکمل صفائے کا بھی عزم کیا اور ساتھ ہی ساتھ شمالی کوریا میں پائی جانے والی خطرناک صورتحال کی یکسوئی پر بھی کافی دیر تک بات چیت کی ۔ دونوں قائدین اس نکتہ پر بھی متفق تھے کہ شام میں جنگ کا سلسلہ کچھ زیادہ ہی دراز ہوگیا ہے اور اب اس کو روکا جانا چاہئے ۔ انسانی جانوں کا اتلاف تقریباً روزآنہ کا معمول بن گیا ہے۔ شام کی خانہ جنگی کے خاتمہ کیلئے تمام پارٹیوں کو مشترکہ طورپر کوشش کرنی چاہئے ۔ علاوہ ازیں دونوں قائدین نے دیگر موضوعات پر بھی بات چیت کی جو عالمی امن پر مرکوز تھی ۔ اس سلسلہ میں امریکہ 3 اور 4 مئی کو اپنا نمائندہ آستانہ ، قازقستان روانہ کرے گا جہاں جنگ بندی کے موضوع پر بات چیت ہوگی ۔ بہرحال دونوں قائدین کے درمیان شام کی خانہ جنگی کا خاتمہ اور شمالی کوریا میں پائی جانے والی خطرناک صورتحال بات چیت کا اصل موضوع تھا ۔ اس موقع پر پوٹن نے ٹرمپ سے دوبدو ملاقات کی خواہش بھی ظاہر کی کیونکہ ماہ جولائی میں دونوں قائدین جرمنی کے شہر ہیمبرگ میں G-20 چوٹی اجلاس میں شرکت کریں گے ۔ یاد رہے کہ ٹرمپ کے عہدۂ صدارت پر فائز ہونے کے بعد دونوں قائدین کی کم و بیش یہ تیسری بات چیت تھی ۔

TOPPOPULARRECENT