Tuesday , September 25 2018
Home / Top Stories / شام کے باغیوں کے زیرقبضہ دوما پر تازہ فضائی حملے

شام کے باغیوں کے زیرقبضہ دوما پر تازہ فضائی حملے

۔70افراد ہلاک ‘ 11کو تنفس میں تکلیف کی شکایت ‘ دولت اسلامیہ سے آزاد مشرقی شام میں کلاسیس کا آغاز
بیروت ۔ 8اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) اپوزیشن کے آخری مستحکم گڑھ مشرقی غوطہ میں تازہ فضائی حملوں کے نتیجہ میں کم از کم 70شہری گذشتہ 24گھنٹوں کے دوران ہلاک کردیئے گئے ۔ جب کہ 11افراد کو تنفس میں تکلیف کی شکایت ہوگئی ۔ باغیوں کے زیرقبضہ آخری مستحکم گڑھ مشرقی غوطہ میں صدر بشارالاسد کی جانب سے بچوں کے خلاف ’’ زہریلی گیس ‘‘ استعمال کرنے کا الزام عائد کیا جارہا ہے ۔ حکومت شام نے مبینہ طور پر خوفناک فوج کی کارروائی کے ساتھ ساتھ شہریوں کی آبادی پر فضائی حملوں میں زہریلی گیس کا استعمال کیا ہے ‘ جب کہ روس کی جانب سے فضائی حملوں میں کمی واقع ہوئی ہے جس کی وجہ سے مبینہ طور پر گذشتہ 10دن سے سرکاری فوج کی کارروائی مسلسل جاری ہے جس میں جملہ 40 شہری ہلاک ہوچکے ہیں ۔ برطانیہ میں قائم شامی رصدگاہ برائے انسانی حقوق نے دعویٰ کیا ہے کہ 30شہری بشمول 8بچے ہفتہ کے دن فضائی حملوں میں ہلاک ہوگئے تھے ۔ بمباری فی الحال روک دی گئی ہے ‘ اس لئے زخمیوں کی صحیح تعداد کا ہنوز پتہ نہیں چل سکا ‘ یہاں تک کہ دوما کے دواخانوں میں برسرکار نوجوان ڈاکٹر محمد بھی درست تعداد کا انکشاف کرنے سے قاصر رہے ۔ انہوں نے کہا کہ بروقت آپریشن نہ ہونے کی وجہ سے کئی بے قصور شہری ہلاک ہوگئے ہیں ۔ وائٹ ہیلمٹس سیول ڈیفنس کی جانب سے جو ٹی وی جھلکیاں شائع کی گئی ہیں اُن میں لوگوں کو ننگے سر بے قصور شہریوں کو گھروں کے ملبے سے کھینچتے ہوئے باہر نکالتے ہوئے اور ملبہ میں پھنسے ہوئے نوجوانوں کو بچاتے ہوئے دکھایا گیا ہے ۔ بچاؤ کارکن بار بار آسمان کی طرف نظر بھی دوڑا تے ہیں جب بھی انہیں لڑاکاطیاروں کی فضاء میں آواز سنائی دیتی ہے وہ اوپر دیکھنے لگتے ہیں ۔ شام کی فوج ملبہ سے پھنسے ہوئے افراد کو نکالنے کی کارروائی خاموشی سے دیکھ رہی ہے ۔ حکومت چاہتی ہے کہ پورے دوما کے اطراف گھیراڈال دیا جائے ‘ 6 شہری دوما پر فضائی حملوں کے نتیجہ میں برسرموقع ہلاک اور دیگر کئی زخمی ہوگئے ۔ سرکاری ٹی وی کے نشریہ میں دمشق کے اسپتال کی صورتحال راست طور پر دکھائی جارہی ہے جہاں فرش پر پھیلا ہوا خون دیکھا جاسکتا ہے ۔ جیش الاسلام کے ترجمان حمزہ نے کہا کہ ان حملوں میں مضافاتی علاقوں کو نشانہ بنایا جارہا ہے ۔ سرکاری فوج نے جنگ بندی معاہد کی واضح طور پر خلاف ورزی کی ہے۔ دیرالزور سے موصولہ اطلاع کے بموجب دولت اسلامیہ کے جنگجوؤں کے تخلیہ کے بعد اس علاقہ میں کلاسیس کا دوبارہ آغاز ہوگیا ہے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT