شام کے تعلق سے روس کے ویٹو اختیار کی مخالفت

اقوام متحدہ ۔ 21مارچ۔(سیاست ڈاٹ کام) امریکی سفیر برائے اقوام متحدہ نے کہا کہ تشدد کیلئے شام کی حکومت کو ذمہ دار قرار دینے کے خلاف روس کے ویٹو اختیار کی شدید مخالفت کی جانی چاہئے کیوں کہ روس کے ویٹو سے شام کی حکومت جوابدہی سے بچ نکل رہی ہے ۔ اس ملک میں امن کی بحالی کیلئے اقوام متحدہ سلامتی کونسل بھی بے بس ہے جب تک صدر بشارالاسد کو ان کی ذ

اقوام متحدہ ۔ 21مارچ۔(سیاست ڈاٹ کام) امریکی سفیر برائے اقوام متحدہ نے کہا کہ تشدد کیلئے شام کی حکومت کو ذمہ دار قرار دینے کے خلاف روس کے ویٹو اختیار کی شدید مخالفت کی جانی چاہئے کیوں کہ روس کے ویٹو سے شام کی حکومت جوابدہی سے بچ نکل رہی ہے ۔ اس ملک میں امن کی بحالی کیلئے اقوام متحدہ سلامتی کونسل بھی بے بس ہے جب تک صدر بشارالاسد کو ان کی ذمہ داریوں کا احساس نہیں دلایا جاتا اور انھیں جوابدہ نہیں بنایا جاتا وہ جو چاہے کرتے رہیں گے ۔ ایک انٹرویو میں امریکی سفیر سانتھا پاور نے کہا کہ خانہ جنگی جاری ہے کیوں کہ سلامتی کونسل شام کے مسئلہ پر روس کے اختیارات کو سلب کرنے سے قاصر ہے ۔ سلامتی کونسل بشارالاسد پر دباؤ ڈالنے کے لئے روس کو راضی کرانے میں بھی ناکام ہورہا ہے ۔ ہم جس طرح کی سوچ کے ساتھ آگے بڑھ رہے ہیں روس اس کے برعکس کام کررہا ہے ۔ شام کے شہریوں کے خلاف کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال کی آنے والی رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ شام میں دن بہ دن حالات ابتر ہوتے جارہے ہیں۔ نہ ہی اقوام متحدہ نے اور نہ ہی عالمی کیمیائی ہتھیاروں پر نظر رکھنے والے اداروں نے شام میں کیمیائی ہتھیاروں کے استعمال پر پابندی عائد کی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT