Saturday , September 22 2018
Home / Top Stories / شام کے شہر پامیرا میں داعش کو پسپائی ، 300 ہلاکتیں

شام کے شہر پامیرا میں داعش کو پسپائی ، 300 ہلاکتیں

دمشق ۔ /17 مئی (سیاست ڈاٹ کام) شام کی فوج نے اسلامی اسٹیٹ گروپ کے جہادیوں کو آج تاریخی شہر پامیرا سے پیچھے ڈھکیل دیا جس کے بعد اس عالمی ورثہ کے حامل مقام کے بارے میں اندیشے دور ہوگئے ہیں ۔ تاہم اس لڑائی میں بے شمار افراد ہلاک ہوگئے ۔ انسانی حقوق کے نگرانکار گروپ برائے شام نے بتایا کہ داعش نے چہارشنبہ کو اس صحرائی شہر پر حملہ کیا تھا اور

دمشق ۔ /17 مئی (سیاست ڈاٹ کام) شام کی فوج نے اسلامی اسٹیٹ گروپ کے جہادیوں کو آج تاریخی شہر پامیرا سے پیچھے ڈھکیل دیا جس کے بعد اس عالمی ورثہ کے حامل مقام کے بارے میں اندیشے دور ہوگئے ہیں ۔ تاہم اس لڑائی میں بے شمار افراد ہلاک ہوگئے ۔ انسانی حقوق کے نگرانکار گروپ برائے شام نے بتایا کہ داعش نے چہارشنبہ کو اس صحرائی شہر پر حملہ کیا تھا اور چار دن سے جاری لڑائی میں تقریباً 300 افراد ہلاک ہوئے ہیں ۔ ذرائع کے مطابق 123 سپاہی ، 115 داعش جنگجو اور 57 شہری ہلاک ہوگئے ۔ ان شہریوں میں اکثر کو جہادیوں نے پھانسی دے دی ہے ۔ کل داعش نے جنوبی پڑوسی علاقہ پر جو عصری قصبہ تدمیر سے متصل واقع ہے ‘ کل رات دیر گئے حملہ کیا ۔ انسانی حقوق کی رسدگاہ نامی شامی تنظیم نے جو برطانیہ میں قائم ہے اطلاع دی ہے کہ قصبہ کے مغرب میں توپ خانے کی زبردست فائرنگ کا تبادلہ ہوا ۔ یہ شہر یونسکو کی عالمی تہذیبی ورثہ برطانیہ کے شعبہ نوادرات کے سربراہ مامون عبدالکریم نے کہا کہ جھڑپوں کی شدت میں آج صبح سے کمی آگئی ہے ۔ سرکاری فوج نے دولت اسلامیہ کو متصلہ جدید قصبہ تدمیر کے شمالی علاقہ سے باہر نکال دیا ہے ۔ کھنڈرات کو کوئی نقصان نہیں پہنچا ‘ لیکن اس کا مطلب یہ نہیں ہے کہ ہمیں خوفزدہ نہیں ہونا چاہیئے ۔ دولت اسلامیہ اپنے مستحکم گڑھ وادی فرات سے شمال مشرقی دمشق نقلستان کی طرف اپنی پیشرفت جاری رکھے ہوئے ہیں ۔

صوبائی گورنر طلال برازی نے کہا کہ امن کے دنوں میں اس قصبہ کی آبادی 70ہزار تھی جو دولت اسلامیہ کی پیشرفت کی اطلاع پر شہریوں کے فرار کی وجہ سے بہت کم ہوگئی ہے ۔ گورنر نے کہا کہ تمام ضروری احتیاطی اقدامات کئے گئے ہیں اور انسانی بنیادوں پر امداد حاصل کرنے کی کوشش جاری ہے اور جلد از جلد یہ امداد حاصل ہوسکتی ہے ۔ تاہم خوفزدہ شہریوں کا اجتماعی فرار جاری ہے ۔ عبدالکریم نے قدیم شہر اور متصلہ میوزیم کے بارے میں انتہائی اندیشے ظاہر کئے کیونکہ قبل ازیں دولت اسلامیہ نے ماقبل اسلام تہذیبی ورثہ کے حامل شہروں نمرود اور ہترا کو تباہ کردیا ہے ۔ نوادارت کے اس شعبہ کے سربراہ نے کہا کہ خوف و دہشت کے عالم میں زندگی بسر کی جارہی ہے ۔ کیونکہ دولت اسلامیہ پامیرا کے محفوظ فن تعمیر کو بھی تباہ کردے گا ۔ امریکی کمانڈوز نے دولت اسلامیہ کے ایک سینئر قائد کو رات میں دھاوا کرتے ہوئے ہلاک کردیا ۔ امریکی عہدیداروں کے بموجب دولت اسلامیہ کے جہادیوں نے شام کے قدیم ریگستانی شہر پامیرا کے شمالی علاقہ پر قبضہ کرلیا ہے ۔

سرحد پار دولت اسلامیہ عراقی فوج کے ساتھ جنگ میں مصروف ہے تاکہ دفاعی اہمیت کے شہر رمضی پر قبضہ کرسکے جب کہ ترکی کا کہنا ہے کہ فوج نے ایک شامی ہیلی کاپٹر کو مار گرایا ہے ‘ جس نے فضائی حدود کی خلاف ورزی کی تھی ۔ صدر امریکہ بارک اوباما نے خصوصی افواج کو مشرقی شام کے قصبہ العمر میں جمعہ کی رات دھاوا کرنے کی اجازت دی تھی ۔ دھاوے کے دوران دولت اسلامیہ کے سینئر قائد ابوسیاف اور اُن کی شریک حیات ام سیاف کو گرفتار کرلیا گیا ۔ اس جراتمندانہ کارروائی کے دوران کمانڈوز نے دولت اسلامیہ کے داخلی حصہ پر حملہ کیا اور پہلی بار امریکی بری فوج استعمال کی گئی ۔ عراق میں ام سیاف فوجی حراست میں ہے وہ ایک نوجوان یزیدی خاتون ہے جو ایسا معلوم ہوتا ہے کہ غلام کی حیثیت سے قید رکھی گئی تھی ۔ العمر شام کا سب سے بڑا تیل کے کنویں والا شہر ہے ۔ دیرے ازار صوبہ تیل کی دولت سے مالا مال ہے جس پر فی الحال دولت اسلامیہ کا قبضہ ہے ۔ امریکی فوج نے جو عراق کے باہر تعینات ہے ‘ عراقی عہدیداروں کی مرضی سے شام میں دھاوے کئے ۔ کوئی امریکی فوجی ہلاک نہیں ہوا ‘ تاہم اس بات کی کوئی اطلاع نہیں دی گئی کہ دھاوے میں کتنے فوجی شامل تھے ۔ خصوصی کارروائی میں بلیک ہاک ہیلی کاپٹرس اور آسپرے ٹیلٹ روٹرس طیارے استعمال کئے گئے ۔ امریکی فوجیوں نے فائرنگ کے تبادلہ میں کم سے کم 12عسکریت پسندوں کو ہلاک کردیا ۔ دھاوے کی خبر واشنگٹن پہنچ گئی ہے جس نے عراقی فوج کو ہتھیاروں کی سربراہی کی اجازت دی تھی ۔

TOPPOPULARRECENT