Saturday , November 25 2017
Home / ہندوستان / شاہنی شنگھنا پور مندر میں خواتین کے داخلہ پر پابندی برخاست

شاہنی شنگھنا پور مندر میں خواتین کے داخلہ پر پابندی برخاست

بامبئے ہائیکورٹ کی ہدایات کے پیش نظر ٹرسٹیز کا فیصلہ
احمد نگر( مہاراشٹرا )۔ /8اپریل، ( سیاست ڈاٹ کام )سماجی جہد کاوں کے احتجاج کے آگے گھٹنے ٹیکتے ہوئے شاہنی شنگھا پور مندر ٹرسٹ نے گزشتہ کئی دہوں کی روایت سے انحراف کرتے ہوئے آج خواتین کو ایستادہ مورتی کے علاقہ میں داخلہ کی اجازت دے دی ۔ یہ پابندی ایسے وقت برخاست کردی گئی جبکہ مہاراشٹرا میں آج سال نو ( گڈی پوڈوا ) منایا جار جارہا ہے۔ ٹمپل کے ایک ٹرسٹی سیارام ہنکرنے بتایا کہ ہائی کورٹ ہدایات کے پیش نظر یہ فیصلہ کیا گیا کہ بلالحاظ جنس تمام بھکتوں کو اس مقام تک داخلے کی اجازت دی جائے جہاں پر مورتی نصب ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اگر بھوماتا بریگیڈ لیڈر تروپتی دیسائی درشن کیلئے آئیں گی تو ان کا خیرمقدم کیا جائے گا جنہوں نے لارڈ  سترون مندر میں روایت شکنی کے بعد مذکورہ مندر میں داخلے کے مطالبہ پر احتجاجی تحریک چلائی تھی۔ واضح رہے کہ بامبئے ہائی کورٹ نے یکم اپریل کو یہ رولنگ دی تھی کہ کسی بھی مقدس مقام میں داخلہ کیلئے خواتین کو بنیادی حق حاصل ہے اور حکومت کا فریضہ ہے کہ اس کی پاسداری کرے۔شاہنی شنگھنا پور مندر میں خواتین کے داخلے کیلئے گزّشتہ سال احتجاج کیا گیا تھا اور مندر میں زبردستی گھسنے کی کوشش کی گئی تھی لیکن پولیس اور مقامی لوگوں نے انہیں روک دیا تھا۔ احتجاجی تحریک کی علمبردار تروپتی دیسائی نے شاہنی شنگھنا پور مندر ٹرسٹ کے اس فیصلہ کا خیرمقدم کیاکہ اب ہر ایک کیلئے دروازے کھلے رہیں گے کوئی تحدیدات عائد نہیں کی جائیں گی۔

TOPPOPULARRECENT