Saturday , February 24 2018
Home / Top Stories / شاہ اردن کو امریکی یروشلم اقدام پر تشویش

شاہ اردن کو امریکی یروشلم اقدام پر تشویش

نائب صدرامریکہ کا دورہ مشرق وسطیٰ ، پہلی منزل اردن میں آمد ، کھری کھری بات چیت

عمان ۔ /21 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) شاہ اردن عبداللہ دوم نے آج امریکہ کے متنازعہ طور پر یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کے اقدام پر اپنے ملک کی تشویش کا اظہار کیا ۔ نائب صدر امریکہ مائیک پینس نے اپنے دورہ مشرق وسطیٰ کے دوران عمان کا دورہ کیا ۔ صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے امریکی سفارتخانہ برائے اسرائیل یروشلم منتقلی کے فیصلہ پر عالم عرب برہم ہے اور کئی مجوزہ اجلاس پینس کے دورہ سے قبل منسوخ کردیئے گئے ہیں ۔ دراصل پینس کا دورہ ماہ ڈسمبر میں مقرر تھا ۔ امریکہ کے کلیدی شاہ عبداللہ نے کہا کہ انہوں نے پورے گزشتہ سال کے دوران امریکی فیصلہ برائے یروشلم کے بارے میں اپنی تشویش کا اظہار کیا تھا لیکن فلسطین اسرائیل تنازعہ کی جامع یکسوئی سے پہلے ہی صدر ٹرمپ نے امریکی سفارتخانہ یروشلم منتقلی کا متنازعہ فیصلہ سنادیا جو یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کے مترادف ہے ۔ اسرائیل نے 1967 ء میں مغربی کنارہ پر قبضہ کرلیا تھا اور بعد ازاں یروشلم کا اسرائیل میں الحاق کرلیا جسے بین الاقوامی برادری نے ہنوز تسلیم نہیں کیا ہے ۔ اسرائیل یروشلم کو اپنا دارالحکومت قرار دیتا ہے جبکہ فلسطینی اس کے مشرقی علاقہ کو اپنی آئندہ مملکتی کا صدر مقام سمجھتے ہیں ۔ اسرائیلی اور فلسطینی یکساں طور پر ٹرمپ کے اقدام کو امریکہ کی جانب سے اسرائیل کی تائید سمجھ رہے ہیں ۔ پینس اردن کے دورہ کے بعد آج بعد ازاں اسرائیل کا دو روزہ دورہ کریں گے جس کے دوران توقع ہے کہ ان کا استقبال وزیراعظم بنجامن نتن یاہو اور صدر اسرائیل ریووین ریولین کریں گے ۔

TOPPOPULARRECENT