Tuesday , January 23 2018
Home / شہر کی خبریں / شب قدر کے موقع پر عالم اسلام میں امن اور فلسطینی مسلمانوں کیلئے دعا

شب قدر کے موقع پر عالم اسلام میں امن اور فلسطینی مسلمانوں کیلئے دعا

دونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد میں خشوع و خضوع کے ساتھ عبادات اور جلسوں کا انعقاد

دونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد میں خشوع و خضوع کے ساتھ عبادات اور جلسوں کا انعقاد
حیدرآباد 25 جولائی (سیاست نیوز) دونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد میں لیلۃ القدر کا خصوصی اہتمام کیا گیا۔ شہر کی مختلف مساجد کے علاوہ مرکزی مقامات پر جلسہ ہائے شب قدر منعقد کئے گئے جن سے علمائے کرام و مشائخین عظام کے علاوہ بیرونی مقررین نے بھی مخاطب کرکے فضائل شب قدر بیان کئے۔ شب قدر کے خصوصی اجتماعات میں عالم اسلام میں قیام امن کے علاوہ فلسطینی مسلمانوں کیلئے خصوصی دعائیں کی گئیں۔ علماء و مشائخین نے جلسہ شب قدر سے خطاب کے دوران کہاکہ اللہ تعالیٰ نے اُمت محمدیہ ﷺ کو ہزاروں راتوں سے افضل ایک ایسی رات عطا فرمائی ہے جس میں کی جانے والی عبادتوں کا ثواب ہزار راتوں کی عبادت سے افضل ہے۔ فضائل شب قدر کے دوران اِس بات پر خصوصی توجہ مبذول کروائی گئی کہ شب قدر ماہ رمضان المبارک کے آخری عشرہ کی طاق راتوں میں تلاش کی تاکید کی گئی ہے لیکن اجماع اُمت کی بناء پر اِسے 27 ویں شب قرار دیا گیا ہے۔ اِس کے باوجود طاق راتوں میں عبادتوں کے ذریعہ شب قدر کی عبادتوں سے فیضیاب ہونے کی کوششیں کی جانی چاہئیں۔ جامع مسجد چوک، میلاد میدان خلوت مبارک، مغلپورہ پلے گراؤنڈ، جامع مسجد دارالشفاء کے علاوہ دیگر مقامات پر جلسہ ہائے شب قدر منعقد کئے گئے۔ مولانا محمد حسام الدین ثانی جعفر پاشاہ نے جلسہ شب قدر سے مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ اللہ تعالیٰ نے اِس قدر والی رات کے ذریعہ اُمت مسلمہ کو جو موقع عطا کیا ہے اُس سے ہمیں فیضیاب ہونا چاہئے۔ اُنھوں نے بتایا کہ ماہ رمضان المبارک کی عبادتوں، ریاضتوں اور روزوں کی قبولیت کیلئے دعائیں کی جانی چاہئیں اور اِس رات میں ہی نہیں بلکہ ماہ رمضان المبارک کے آخری عشرہ میں دوزخ سے نجات کیلئے خصوصی دعاؤں کا اہتمام کرنا چاہئے۔ دیگر مقامات پر جلسوں میں علمائے کرام نے اپنے خطاب کے دوران نوجوانوں کو تلقین کی کہ وہ ماہ رمضان المبارک میں جس پاکیزگی کے ساتھ زندگی گزار رہے تھے وہ آئندہ بھی اِسی پاکیزگی کے ساتھ زندگی گزارنے کا عہد کریں۔ چونکہ اللہ تعالیٰ اپنے بندوں میں پیدا ہونے والی مثبت تبدیلیوں کو پسند فرماتا ہے اور ہدایت کے راستے کھول دیتا ہے۔ علمائے کرام نے جلسہ ہائے شب قدر کے دوران فلسطینی مظلوموں کے لئے نہ صرف خصوصی دعاؤں کا اہتمام کیا بلکہ فلسطین میں موجود مسجد اقصیٰ کی اہمیت کو بھی اُجاگر کیا۔ نوجوانوں کو اِس بات کی بھی تلقین کی گئی کہ وہ قبلہ اوّل مسجد اقصیٰ کی بازیابی اور ظالموں کی سرکوبی کے لئے بھی دعا کریں چونکہ اللہ تعالیٰ جس طرح جوانی کی عبادتوں کو پسند فرماتا ہے اُسی طرح نوجوانوں کی دعائیں بھی اُمت کے حق میں مقبول ہوتی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT