Thursday , August 16 2018
Home / ہندوستان / شتروگھن سنہا کی مودی حکومت پر تنقید ، نوٹوں کی تنسیخ اہم موضوع

شتروگھن سنہا کی مودی حکومت پر تنقید ، نوٹوں کی تنسیخ اہم موضوع

قرضہ جات کی ادائیگی موضوعات، پی این بی اسکام میں کئی افراد سے سی بی آئی کی تفتیش

پٹنہ ۔ 5 مارچ ۔(سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی کے ناراض رکن پارلیمنٹ شتروگھن سنہا نے آج نریندر مودی حکومت پر نوٹوں کی تنسیخ ، پنجاب نیشنل بینک اسکام اور کلیدی ملزمین کے قرضہ جات کی ادائیگی سے بچنے کیلئے بیرونی ممالک کو فرار کی بنیاد پر مرکز کی مودی حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا ۔ پٹنہ صاحب کے رکن پارلیمنٹ اپنی پارٹی میں اور مرکزی حکومت کے کچھ عرصہ سے معتوب بن چکے ہیں۔ انھوں نے وزیراعظم سے ’’پکوڑہ ‘‘ تبصرے اور قرض لینے والوں کے زبردست قرضہ جات کی ادائیگی کی بنیاد پر حکومت پر تنقید کی ہے ۔ انھوں نے اپنے ٹوئٹر پر تحریر کیا کہ حکومت نے اس بات کو یقینی بنایا تھا کہ ہر غریب اور اوسط طبقہ کا ہندوستانی طویل قطاروں میں کھڑا رہے ، بینک جائے ، رقم جمع کروائے اور اپنی ’’جنم کنڈلی ‘‘ کی تفصیلات حاصل کرے ۔ انھوں نے کہاکہ مرکزی حکومت نے اس بات کو بھی یقینی بنایا کہ غریب ہندوستانیوں کی رقم محفوظ طورپر بیرونِ ملک منتقل کی جائے ۔ اُن کے یہ تبصرے واضح طورپر پانچسو اور ہزار روپئے مالیتی نوٹوں پر نومبر 2016 ء سے امتناع عائد کرنے اور کالے دھن کو قابو پانے کے بہانے مودی حکومت کے اس اقدام پر تنقید تھا۔ اپنے ٹوئٹر پر انھوں نے کہا کہ مودی حکومت نیرو مودی اور میہول چوکسی کو گرفتار کرنے سے قاصر رہی جنھوں نے پنجاب نیشنل بینک سے 12,000 کروڑ روپئے کا قرض حاصل کرکے اُس کے ساتھ دھوکہ دہی کی ہے اور ملک سے باہر فرار ہوگئے ہیں۔ شتروگھن سنہا نے ایک اور ٹوئٹر تحریر میں کہاکہ جس رفتار سے بڑے تاجر یا تو اپنے کاروبار بند کررہے ہیں یا بیرون ملک فرار ہورہے ہیں صرف دیانتدار پکوڑہ بیچنے والے ملک میں باقی رہ جائیں گے ۔ انھوں نے مشورہ دیا کہ کبھی چھوٹے قرضہ مت لو ہمیشہ ہزاروں ، کروڑوں روپئے قرض لو ، اس طرح بیشتر طاقتور افراد قرض لینے والے کی حفاظت پر آمادہ ہوجائیں گے ۔ شتروگھن سنہا مودی کے حالیہ بیانات پر تنقید کررہے تھے جن میں انھوں نے کہاتھا کہ پکوڑہ بیچنے والا بھی باروزگار سمجھا جانا چاہئے ۔ دریں اثناء چار ملزمین کو پی این بی اسکام کے سلسلے میں 17 مارچ تک سی بی آئی کی تحویل میں دیدیا گیا ہے ۔ نئی دہلی سے موصولہ اطلاع کے بموجب سی بی آئی نے پنجاب نیشنل بینک کے جنرل منیجر سے نیرو مودی فراڈ کیس کے سلسلے میں بھی تفتیش کی ہے اور ڈائرکٹر آر پی انفورسسٹم سے بھی پوچھ تاچھ کی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT