Saturday , January 20 2018
Home / شہر کی خبریں / شرائط کی عدم تکمیل پر انجینئرنگ کالجس کیخلاف کارروائی

شرائط کی عدم تکمیل پر انجینئرنگ کالجس کیخلاف کارروائی

163 کے منجملہ 29 اقلیتی کالجس بھی شامل، وزیر تعلیم کا بیان

163 کے منجملہ 29 اقلیتی کالجس بھی شامل، وزیر تعلیم کا بیان
حیدرآباد۔/17مارچ، ( سیاست نیوز) ڈپٹی چیف منسٹر و وزیر تعلیم کڈیم سری ہری نے انکشاف کیا کہ تلنگانہ میں شرائط کی عدم تکمیل کے سلسلہ میں جن 163 انجینئرنگ کالجس کے خلاف کارروائی کی گئی اُن میں 29اقلیتی کالجس ہیں۔ اسمبلی میں وقفہ سوالات کے دوران اس مسئلہ پر وزیر تعلیم نے بتایا کہ تلنگانہ میں فی الوقت ایک لاکھ 76ہزار 790 انجینئرنگ نشستیں ہیں جن میں ایک لاکھ نشستیں خالی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جے این ٹی یو اور آل انڈیا کونسل فار ٹیکنیکل ایجوکیشن کی جانب سے مقرر کردہ شرائط کی عدم تکمیل کے سبب 163کالجس کو غیر مسلمہ قرار دیتے ہوئے داخلوں کی اجازت نہیں دی گئی۔ ان کالجس کے 814کورسیس کو غیر مسلمہ قرار دے دیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ 16کالجس کے خلاف مقدمہ درج کرتے ہوئے تحقیقات کا آغاز کیا گیا۔ کڈیم سری ہری نے کہا کہ شرائط کی عدم تکمیل کے سلسلہ میں جن کالجس کے خلاف کارروائی کی گئی ان میں سے 10کالجس نے حکومت کو درخواست پیش کی ہے کہ انہیں کالج بند کرنے کی اجازت دی جائے۔ بعض کالجس نے کورسیس میں کمی کی اجازت طلب کی ہے۔ کڈیم سری ہری کے مطابق حکومت انجینئرنگ کالجس کو شرائط کی تکمیل کے ذریعہ معیار تعلیم میں اضافہ کی خواہاں ہے۔ حکومت کو انجینئرنگ کالجس سے کوئی شخصی عناد نہیں اور کارروائی کا مقصد انجینئرنگ کے معیار تعلیم کو بہتر بنانا ہے۔ انہوں نے کہا کہ فیس باز ادائیگی کی رقم میں بے قاعدگیوں سے متعلق کوئی شکایات ابھی تک حکومت کو نہیں ملی ہیں تاہم قواعد کی خلاف ورزی جیسی کئی مثالیں منظر عام پر آئی ہیں۔ انہوں نے ان اطلاعات کو حقائق سے بعید قراردیا کہ 40 کالجس نے حکومت سے ادارے بند کرنے کی اجازت طلب کی ہے اور مزید 40کالجس بند ہونے کے قریب ہیں۔ انہوں نے کالجس کے معائنہ کے دوران پائے گئے نقائص اور خامیوں کی تفصیلات ارکان کو پیش کرنے کا تیقن دیا۔

TOPPOPULARRECENT