Saturday , November 18 2017
Home / سیاسیات / شرد یادو کا جے ڈی (یو) گروپ الیکشن کمیشن سے رجوع

شرد یادو کا جے ڈی (یو) گروپ الیکشن کمیشن سے رجوع

انتخابی نشان، پارٹی دفاتر پر دعویداری ، قومی کونسل اراکین ، پارٹی ورکرس اور ریاستی صدور کی اکثریت کی تائید حاصل ہونے کا دعویٰ

نئی دہلی 25 اگسٹ (سیاست ڈاٹ کام) شرد یادو زیرقیادت جے ڈی (یو) گروپ نے آج الیکشن کمیشن سے رجوع ہوکر دعویٰ کیاکہ وہی حقیقی پارٹی کا نمائندہ ہے اور اِس کی قومی کونسل کے اراکین کی اکثریت اُسی کے ساتھ ہے۔ یہ تبدیلی ایک روز بعد سامنے آئی جبکہ جنتادل (یونائیٹیڈ) نے شرد یادو کو مکتوب تحریر کرتے ہوئے اُن سے پٹنہ میں اتوار کو منعقد شدنی راشٹرا جنتادل (آر جے ڈی) ریالی میں شرکت نہ کرنے پر زور دیا اور ادعا کیاکہ اگر اُنھوں نے شرکت کی تو وہ پارٹی کے اُصولوں کے خلاف اقدام سمجھا جائے گا۔ جنتادل (یو) کا مکتوب جو شرد یادو کو پارٹی سکریٹری جنرل کے سی تیاگی کی طرف سے بھیجا گیا، اُس کا مطلب ہے کہ شرد یادو کی آر جے ڈی ریالی میں شرکت کی صورت میں پارٹی سے رضاکارانہ سبکدوشی ہوجائے گی۔ شرد یادو نے قبل ازیں کہا تھا کہ وہ آر جے ڈی ریالی میں حصہ لیں گے اور کل پٹنہ کیلئے روانہ ہوں گے۔

ارون شریواستو جو باغی جنتادل (یو) کے قریبی مددگار اور پارٹی کے سابق جنرل سکریٹری ہیں اور جنھیں عہدے سے حال ہی میں ہٹادیا گیا، اُنھوں نے اخباری نمائندوں کو بتایا کہ اُن کے گروپ نے الیکشن کمیشن سے کہاکہ پارٹی ورکرس، نیشنل کونسل ممبرس اور ریاستی صدور کی اکثریت اُنھیں کے گروپ کے ساتھ ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ ہم پارٹی کے بانی اراکین ہیں۔ نتیش کمار ہمیں کس طرح ہٹاسکتے ہیں۔ اُنھوں نے کہاکہ وہ صدر جنتادل (یو) کے ساتھ ایسے کسی رشتے میں بندھے نہیں تھے کہ وہ اپنی مرضی کے مطابق ہمیں ہٹاسکیں۔ شرد یادو گروپ نے جنتادل (یو) کے انتخابی نشان (تیر) پر اپنی دعویداری بھی پیش کی ہے اور پارٹی کے لئے الاٹ کردہ دفاتر پر بھی اپنا حق جتایا ہے۔ چیف منسٹر بہار نتیش کمار جے ڈی (یو) کے صدر بھی ہیں، تین ایم ایل ایز کو چھوڑ کر تمام پارٹی ارکان اسمبلی اور تمام ایم پیز اُن کے ساتھ ہیں۔ تیاگی نے قبل ازیں شرد یادو گروپ کے دعوؤں کو خارج کرتے ہوئے کہا تھا کہ دو یا تین اشخاص کی بغاوت کو پھوٹ قرار نہیں دیا جاسکتا۔

TOPPOPULARRECENT