Tuesday , December 12 2017
Home / سیاسیات / شرد یادو کو راجیہ سبھا سے نا اہل قرار دینے جے ڈی یو کا زور

شرد یادو کو راجیہ سبھا سے نا اہل قرار دینے جے ڈی یو کا زور

نئی دہلی 19 ستمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) آل انڈیا انا ڈی ایم کے کے 18 ارکان اسمبلی کو نا اہل قرار دینے اسپیکر اسمبلی کے فیصلے کا حوالہ دیتے ہوئے جنتادل یو نے آج مطالبہ کیا کہ اس کے دو باغی ارکان پارلیمنٹ شرد یادو اور علی انصاری کے خلاف بھی ایسی ہی کارروائی کی جائے اور انہیں نا اہل قرار دیا جائے ۔ جنتادل یو کے چیف ترجمان کے سی تیاگی نے ایک بیان میں کہا کہ شرد یادو اور علی انور نے بھی اسی طرز عمل میں کام کیا تھا جس طرح سے آل انڈیا ارکان اسمبلی نے کیا تھا ۔ یہ لوگ مخالف پارٹی سرگرمیوں میں ملوث رہے ہیں۔ پارٹی اس سلسلہ میں پہلے ہی صدر نشین راجیہ سبھا سے رجوع ہوچکی ہے تاکہ دو ارکان پارلیمنٹ کو نا اہل قرار دیا جاسکے ۔ ان دونوں کو کل ہی ایوان کی جانب سے ایک اور ہفتے کی مہلت دی گئی تھی تاکہ وہ ان کے خلاف پارٹی کے الزامات پر جواب داخل کرسکیں۔ تیاگی نے کانگریس لیڈر آنند شرما اور سی پی ایم لیڈر سیتارام یچوری کے بیانات کی بھی مخالفت کی کیونکہ دونوں نے ہی صدر نشین سے کہا کہ وہ اس مسئلہ کو اقدار اور مراعات کمیٹی سے رجوع کریں۔ تیاگی کا کہنا تھا کہ صدر نشین راجیہ سبھا وینکیا نائیڈو اہل اتھاریٹی ہیں کہ وہ اس مسئلہ پر کوئی فیصلہ کرسکیں۔ اس کے علاوہ اس طرح کے دستوری معاملات میں بیرونی افراد کے بیانات قابل ستائش نہیں ہیں۔ تیاگی نے ٹاملناڈو اسپیکر اسمبلی کے فیصلے کا حولہ دیا اور کہا کہ جنتادل یو کی جانب سے آل انڈیا انا ڈی ایم کے کے 18 ارکان اسمبلی کو نا اہل قرار دئے جانے کا خیر مقدم کرتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس فیصلے سے ایک بار پھر اسپیکر کو حاصل اختیارات ثابت ہوتے ہیں۔ اس سے اسپیکر کو یہ اختیار حاصل ہوتا ہے کہ وہ کسی رکن کو ایوان سے نا اہل قرار دیں۔ یہی طریقہ کار شرد یادو اور علی انصاری کے تعلق سے اختیار کیا جانا چاہئے ۔

TOPPOPULARRECENT