Monday , November 20 2017
Home / Top Stories / ششی کلاء کو 129 ارکان اسمبلی کی تائید کا دعویٰ

ششی کلاء کو 129 ارکان اسمبلی کی تائید کا دعویٰ

تشکیل حکومت کی دعوت متوقع: اناڈی ایم کے ترجمان ،غیرمتناسب اثاثوں کے مقدمہ کا آج فیصلہ

چینائی ۔13 فبروری ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) ٹاملناڈو میں تشکیل حکومت کے مسئلہ کا ہنوز کوئی حل نظر نہیں آرہا ہے اس دوران حکمراں انا ڈی ایم کے نے دعویٰ کیا ہے کہ ارکان اسمبلی کی اکثریت اپنی پارٹی کی جنرل سکریٹری وی کے ششی کلاء کے ساتھ ہے اور اس خیال کا اظہار کیاکہ گورنر ودیاساگر راؤ کی طرف سے ششی کلاء کو دعوت دیئے جانے کا اغلب امکان ہے ۔ انا ڈی ایم کے کے ترجمان وائیگائی چلون نے کہاکہ چیف منسٹر پنیراسلوم کو صرف سات ارکان اسمبلی کی تائید حاصل ہے چنانچہ وہ ایوان میں عددی طاقت آزمائی کی صورت میں اپنی اکثریت ثابت نہیں کرسکتے ۔ چلون نے اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ’’وہ (پنیرا) انھیں کسی کی طرف سے دی گئی غلط معلومات کی بنیاد پر اکثریت ثابت کرنے کی بات کہہ رہے ہیں۔ حالانکہ انا ڈی ایم کے ارکان کی اکثریت چنماں ( ششی کلاء ) کے ساتھ ہے ۔ چنانچہ گورنر کو چاہئے کہ وہ انھیں (چنماں) کو تشکیل حکومت کی دعوت دیں۔ ہم توقع کرتے ہیں کہ گورنر کی جانب سے اس ضمن میں مدعو کئے جانے کے قوی امکانات ہیں ‘‘ ۔ پنیرا کو پارلیمنٹ کے 11 ارکان کی تائید سے متعلق ایک سوال پر چلون نے یقین ظاہر کیا کہ یہ ارکان پارلیمنٹ اپنی وفاداری تبدیل کرتے ہوئے دوبارہ ششی کلاء کیمپ میں شامل ہوجائیں گے ۔ششی کلاء نے اپنی دیرینہ سہیلی آنجہانی جیہ للیتا کی طرف سے پروان چڑھائی گئی اس پارٹی کا بہرقیمت تحفظ کرنے کا عہد کرتے ہوئے کہا کہ تھاکہ ’’اس کاز کیلئے میں اپنی جان بھی دے سکتی ہوں‘‘ ۔ ششی کلاء نے چینائی سے 80 کیلومیٹر دور واقع ایک تفریحی مرکز کا آج بھی دورہ کیا جہاں ان کی پارٹی کے 129 ارکان اسمبلی کو رکھا گیاہے ۔ انھوں نے ارکان کو یرغمال بنانے کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ یہ ارکان آزاد اور محفوظ ہیں نیز اپنی مرضی سے وہاں مقیم ہیں۔ اس دوران نئی دہلی سے موصولہ اطلاع کے بموجب انا ڈی ایم کے کی جنرل سکریٹری وی کے ششی کلا کے خلاف سپریم کورٹ میں زیردوران غیرمتناسب اثاثوں کے مقدمہ پر منگل کو 10:30 بجے دن فیصلہ کا اعلان کردیا جائے گا ۔ ٹاملناڈو میں سنگین صورتحال اختیار کرنے والے سیاسی بحران کے درمیان اٹارنی جنرل مکل روہنگی نے گورنر سی ایچ ودیاساگر راؤ کو مشورہ دیا ہے کہ وہ اسمبلی میں اکثریت ثابت کرنے کی ہدایت دیں۔ کرناٹک ہائیکورٹ نے اس مقدمہ میں کلیدی ملزم جیہ للیتا اور ان کی سہیلی ششی کلاء کو باعزت بری کردیا تھاجس کے خلاف حکومت کرناٹک نے سپریم کورٹ میں اپیل دائر کی تھی جس کی سماعت کے بعد جسٹس پی سی گھوش اور جسٹس امیتاوا رائے کل اپنے فیصلے کا اعلان کریں گے۔ واضح رہے کہ اٹارنی جنرل پہلے ہی واضح کرچکے تھے کہ فیصلہ کے اعلان سے قبل بھی ششی کلاء کو چیف منسٹر کے عہدہ کا حلف دلایا جاسکتا ہے لیکن گورنر ودیا ساگر راؤ اس مقدمہ کاعذر بتاتے ہوئے انھیں حلف دلانے سے پس و پیش کررہے تھے ۔ پنیراسلوم نے ششی کلاء کے خلاف علم بغاوت بلند کرتے ہوئے کہا تھا کہ انھیں چیف منسٹر کے عہدہ سے سبکدوشی کیلئے مجبور کیاگیا تھا لیکن اب وہ یہ عہدہ چھوڑنا نہیں چاہتے کیونکہ انھیں ارکان اسمبلی کی اکثریتی تائید حاصل ہے ۔ ششی کلاء اسمبلی کی رکن نہیں ہیںچنانچہ چیف منسٹر کے عہدہ پر فائز ہونے کی صورت میں انھیں اندرون چھ ماہ اسمبلی کیلئے منتخب ہونا ضروری ہوگا ۔

TOPPOPULARRECENT