Tuesday , October 23 2018
Home / شہر کی خبریں / شعور بیداری کیلئے مختصر فلموں کی تیاری ۔ عوام کو چوکس رہنے کی اپیل

شعور بیداری کیلئے مختصر فلموں کی تیاری ۔ عوام کو چوکس رہنے کی اپیل

حیدرآباد ۔ /22 فبروری (سیاست نیوز) آن لائن دھوکہ دہی اور جرائم میں دن بدن اضافہ ہوتا جارہا ہے اور آن لائن دھوکہ باز خود کو بینک افسر ظاہر کرتے ہوئے عوام کو فیس بک ، واٹس اپ اور فونس کے ذریعہ ان کے ڈیبٹ کارڈ ، کریڈٹ کارڈ کی تفصیلات حاصل کرکے لاکھوں کا دھوکہ دے رہے ہیں تو قیمتی تحائف ، لاٹری اور شادی کے نام پر بھی دھوکہ باز لاکھوں روپئے آن لائن غائب کررہے ہیں اور بہت سے لوگ جلد یا تاخیر سے پتہ چلنے پر پولیس سے رجوع ہوتے ہیں اور اکثر لوگ عزت کے خوف سے پولیس سے رجوع نہیں ہورہے ہیں ۔ پولیس کی جانب سے ایسے بہت سے دھوکہ بازوں کو گرفتار بھی کیا جارہا ہے ۔ اس مناسبت سے پولیس نے عوام میں شعور بیداری کیلئے مختلف فلمی شخصیات کے ذریعہ شارٹ فلمیں تیار کررہی ہیں ۔ تلگو فلمی شخصیات جیسے جونیر این ٹی آر ، راجا مولی ، وجئے دیورکنڈہ اور دیگر آرٹسٹوں نے اپنی خدمات پیش کی ہیں اور تیار کردہ شارٹ فلموں کو بس اسٹانڈس ، ریلوے اسٹیشنس ، سنیما ہالس ، ٹی وی اور عوامی مقامات پر نشر کیا جائے گا اور ان شارٹ فلموں کو تیار کرکے انٹرنیٹ پر اپ لوڈ کیا گیا ہے اور اب تک 50 لاکھ افراد نے ان مختصر فلموں کو دیکھا ہے اور واضح کیا گیا ہے کہ جرائم پیشہ و دھوکہ باز افراد فیس بک اور واٹس اپ کے ذریعہ کیسے عوام کو دھوکے دیتے ہوئے نیٹ پر موجود تصاویر کا غلط استعمال کرتے ہیں اور تمام دھوکے باز نوجوان لڑکے اور لڑکیوں کے فوٹوز کا استعمال کرتے ہوئے دھوکہ دے رہے ہیں ۔ دھوکے بازوں کے جال میں پھنسنے والی لڑکیوں سے شادی کے نام پر فون کے ذریعہ رابطہ قائم کرتے ہوئے انہیں بیرونی ممالک سے قیمتی تحائف روانہ کرنے کا ادعا کرتے ہیں اور تحائف حاصل کرنے کیلئے کسٹم فیس ادائیگی کے نام پر لڑکیوں سے لاکھوں روپئے حاصل کرتے ہیں اور بغرض دھوکہ باز چیاٹنگ کے نام پر لڑکیوں کی تصاویر حاصل کرکے تصاویر کا غلط استعمال کررہے ہیں ۔ مختصر فلموں میں ان تمام مسائل کو پیش کیا گیا ہے ۔ علاوہ ازیں دھوکہ باز بے روزگار افراد کو فون کرکے مشہور کمپنیز میں ملازمت دینے کے بہانے بھی دھوکہ دے رہے ہیں ۔ حالانکہ عوام کو جان لینا چاہئیے کہ کوئی بھی کمپنی جائیدادوں پر بھرتی کیلئے کسی کو بھی بذریعہ فون یا واٹس اپ ، فیس بک کے ذریعہ اطلاع نہیں دیتی بلکہ باقاعدہ اعلامیہ جاری کرتے ہوئے جائیدادوں پر بھرتیاں کرتی ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT